.

نماز عید کے بعد یمنی باغیوں اور شہریوں میں لڑائی کی اطلاعات

یمنی شہریوں کا حوثی آئمہ کے اقتداء میں عید کی نماز کا بائیکاٹ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے مختلف شہروں میں کل عید کے روز باغیوں اور عام شہریوں کے درمیان کشیدگی اور لڑائیوں کی اطلاعات ملی ہیں۔

العربیہ ٹی وی چینل کے ذریعے کے مطابق عمران اور شبوۃ گورنریوں میں شہریوں نے حوثی فرقہ پرستوں کے مقرر کردہ خطیبوں کے پیچھے عید کی نماز ادا کرنے اور حوثیوں کی حمایت میں نعرے بازی سے صاف انکار کردیا جس پر باغیوں نے شہریوں کو زدو کوب کیا ہے۔

عمران گورنری سے ملنے والی اطلاعات کے مطابق حوثیوں کی طرف سے اپنی حمایت میں نعرے بازی سے انکار پر شہریوں پر فائرنگ کی گئی جس کے نتیجے میں کم سے کم چار افراد ہلاک اور تین زخمی ہوگئے۔

عینی شاہدین نے بتایا کہ حوثیوں کے گڑھ سمجھے جانے والے شہارات ڈاریکٹوریٹ کی جامع مسجد المغارب میں نماز عید کے بعد نمازیوں اورحوثی عناصر کے درمیان تصادم ہوا جس میں کم سے کم چار افراد ہلاک اور تین زخمی ہوگئے۔

ادھر وسطی یمن کی شبوۃ گورنری میں مساجد میں حوثی خطیب مقرر کیے جانے پر شہریوں نے نماز عید کا بائیکاٹ کردیا اور وہ عید پڑھے بغیر گھروں کو واپس چلے گئے۔

مقامی ذرائع نے بتایا کہ بیحان ڈاریکٹوریٹ کے العلیا شہر کی مرکزی عید گاہ میں عید کا خطبہ دینے کے لیے جب حوثیوں کے مقرر کردہ امام ابو نایف ممبر پرآیا تو شہری اٹھ کر چلے گئے۔

اس کے علاوہ شبوۃ میں موقس اور النقوب کی مساجد میں بھی عوام نے حوثیوں کے مقرر کردہ آئمہ کے پیچھے عید کی نماز ادا کرنےسے انکار کر دیا۔