.

یمنی کمانڈوز باغیوں کی شکست فاش کے لیے پرعزم

’العربیہ‘ کی ٹیم کی پہلی بار حکومت نواز کمانڈز سے ملاقات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

’العربیہ‘ چینل کی ٹیم نے پہلی بار یمن میں صرواح کے مقام پر حکومت کی حامی مزاحمتی ملیشیا کے کمانڈوز کے ساتھ ملاقات کی۔ ملاقات میں مزاحمتی کمانڈوز نے حوثی باغیوں کے خلاف جنگ منطقی انجام تک پہنچانے کے عزم کا اظہار کیا۔

’العربیہ‘ سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے یمنی کمانڈوز کے گروپ نے اتوار کے روز صرواح میں باغیوں کے خلاف کیے گئے ایک کامیاب آپریشن کے بارے میں بتایا۔ انہوں نے کہا کہ عرب اتحادی فوج کی معاونت اور انٹیلی جنس معلومات کی بنیاد پر انہوں نے حوثی باغیوں کے ایک خفیہ ٹھکانے پر کارروائی کرکے متعدد جنگجوؤں کو ہلاک اور کئی کو گرفتار کیا ہے۔

خیال رہے کہ ہفتے اور اتوار کے روز مآرب شہر میں دو اہم کارروائیوں کے دوران حوثی باغیوں کو غیر معمولی جانی اور مالی نقصان پہنچایا گیا ہے۔

ہفتے کے روز کی گئی کارروائی میں باغیوں کے قائم کردہ بریگیڈ 312کے سربراہ بریگیڈیئر حسین قاسم السقاق کو اس کے نو ساتھیوں سمیت ہلاک کیا گیا۔ اسی آپریشن میں باغی لیڈر محمد الشامی اور ’المسیرہ‘ ٹی وی کے نامہ نگار عبدالقادر محمد صالح سمیت 9 جنگجوؤں کو گرفتار کیا گیا۔

دوسری کارروائی اتحادی فوج کے طیاروں کی مدد سے کی گئی جس میں صرواح کے مقام پر حوثیوں کے ایک اہم اجلاس کو نشانہ بنایا گیا۔ اس کارروائی میں صرواح محاذ کے حوثی کمانڈر ناصر الزعبلی سمیت 12 جنگجو ہلاک ہو گئے تھے۔ صرواح ہی میں حکومتی فورسز کے ساتھ جھڑپوں میں 15 جنگجوؤں کے زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں۔

مقامی ذرائع سے ملنے والی اطلاعات کے مطابق عرب اتحادی فوج نے المخدرہ کے میں باغیوں کو کمک پہنچانے کی کوشش ناکام بناتے ہوئے کم سے کم 10 جنگجو ہلاک اور پندرہ زخمی کیے۔ اتحادی فوج کی طرف سے باغیوں کے ٹھکانوں اور ان کی گاڑیوں پر 10 فضائی حملے کیے گئے جن میں دشمن کو بھاری جانی اور مالی نقصان پہنچایا گیا۔