مانچسٹر میں ایک مسلمان کے طور پر رہنا بہت مشکل ہوگیا:پال پوگبا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

دنیا کے مہنگے ترین قرار دیے گئے فٹ بالر اور مانچسٹر انگلش یونائیڈ کے ہیرو فرانسیسی پال بوگبا نے کہا ہے کہ برطانوی شہر مانچسٹر میں مئی میں ایک موسیقی تقریب پر دہشت گردانہ حملے کے بعد ایک مسلمان کا مانچسٹر میں رہنا بہت مشکل ہوگیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق فرانسیسی مسلمان فٹ بالر پال بوگبا نے امریکی جریدے ’اسکوائر‘ کو دیے گئے ایک تفصیلی انٹرویو میں کہا کہ مئی میں مانچسٹر شہر میں ایک نائیٹ کلب میں ہونے والی محفل موسیقی جس میں امریکی گلوکارہ اریانا گرانڈی نے بھی شرکت کی میں دہشت گردی کےنتیجے میں 22 افراد ہلاک ہوگئے تھے۔ دہشت گردی کے اس خوفناک واقعے کے بعد مانچسٹر میں مسلمانوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا ہے۔

فرانسیسی فٹ بالر کا کہنا ہے کہ ہمیں انسانوں کےقتل عام کے نظریات کی بیخ کنی کرنی چاہیے اور کسی کو شخص کو اپنے نظریات دوسروں پر مسلط کرنے کی اجازت ہرگز نہیں ہونی چاہیے۔ مذہب کی بنیاد پر کسی شخص کا قتل دیوانگی ہے۔ اسلام اس کی اجازت نہیں دیتا۔ آج جو بات میں کہہ رہا ہوں کل کو سب وہی کہیں گے۔زندگی میں بدترین واقعات رونما ہوتے رہے ہیں مگر زندگی کو تباہی کے دھانے پر پہنچنے سے بچانا چاہیے۔

پال پوگبا جنہوں نے ماہ صیام میں عمرہ کی سعادت بھی حاصل کی تھی نے مئی میں اپنے والد کی ناگہانی موت پر بھی گہرے دکھ کا اظہارکیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں