.

قطر خلیجی مفادات کے تحفظ پر متفق ہو یا پھر جی سی سی سے الگ ہو جائے : انور قرقاش

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

متحدہ عرب امارات کے وزیر مملکت برائے امور خارجہ انور قرقاش نے کہا ہے کہ قطر یا تو خلیجی ریاستوں کے مفادات کے تحفظ سے اتفاق کرے یا پھر وہ خلیج تعاون کونسل ( جی سی سی) سے الگ ہوجائے۔

انھوں نے قطر کو خلیجی عرب ممالک کے مطالبات کو تسلیم کرنے کے لیے دی گئی ڈیڈلائن سے چندے قبل اپنے سرکاری ٹویٹر اکاؤنٹ پر لکھا ہے:’’ ہم تاریخی دور سے گزر رہے ہیں اور اس کا خود مختاری سے کوئی تعلق نہیں ہے۔قطر کو یا تو کمیونٹی سے متعلق ذمے داریوں کے تحفظ کا عزم کرنا چاہیے یا پھر اس کو نقصان پہنچانے سے گریز کرنا چاہیے ۔وہ جی سی سی کا تحفظ کرے یا پھر اس سے الگ ہوجائے‘‘۔

سعودی عرب ، مصر ، متحدہ عرب امارات اور بحرین کی جانب سے قطر کو تیرہ مطالبات کو پورا کرنے کے لیے دی گئی ڈیڈ لائن آج منگل کو ختم ہو رہی ہے۔ان ممالک نے 5 جون سے قطر کا بائیکاٹ کررکھا ہے اور وہ قطر پر دہشت گردی کی حمایت اور مالی معاونت کے الزامات عاید کررہے ہیں جبکہ قطر ان الزامات کو مسترد کرتا چلا آرہا ہے۔