.

’منفی محرکات‘ چین، امریکا تعلقات خراب کررہے ہیں: چینی صدر

صدر شی جن پنگ کا ڈونلڈ ٹرمپ کو فون

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

چینی صدر شی جن پنگ نے اپنے امریکی ہم منصب ڈونلڈ ٹرمپ سے کہا ہے کہ وہ دونوں ملکوں کے درمیان تعلقات خراب کرنے والے عوامل کا سد باب کریں کیونکہ منفی محرکات دونوں ممالک کے تعلقات پر منفی اثرات مرتب کررہے ہیں۔

چین کے سرکاری ذرائع ابلاغ کے مطابق بیجنگ کو امریکا کی بعض حرکات پر سخت غصہ ہے۔ صدر شی جن پنگ نے ڈونلڈ ٹرمپ سے اپنے تحفظات کا کھل کر اظہار کیا ہے۔

’سی سی ٹی وی‘ چینل کے مطابق صدر پنگ نے ٹیلیفون پر بات کرتے ہوئے امریکی صدر پر زور دیا کہ وہ ’ون چائنا‘ پالیسی کا احترام کریں اور خود مختار جزیرہ نما تائیوان کی دفاعی مدد کرتے ہوئے چین کے مفادات کا تحفظ یقینی بنائیں۔

خیال رہے کہ دونوں ملکوں کےدرمیان تازہ کشیدگی ایک ایسے وقت میں پیدا ہوئی ہے جب ایک ہفتہ قبل امریکا نے علاحدگی پسند تائیوان کی حکومت کے ساتھ اسلحے کی ایک بڑی ڈیل کی تھی جس پر چین نے سخت اعتراض کیا تھا۔

گذشتہ روز ذرائع ابلاغ میں آنے والی اطلاعات میں یہ بھی کہا گیا تھا کہ جنوبی بحیرہ چین میں امریکی بحری بیڑے کی موجودگی پر بیجنگ نے واشنگٹن سے سخت احتجاج کیا ہے۔ ذرائع کے مطابق چینی صدر نے اپنے امریکی ہم منصب کے ساتھ بھی بحری بیڑے کی موجودگی کا معاملہ اٹھایا تاہم وائیٹ ہاؤس کی طرف سےجاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ صدر شی جن پنگ اور ڈونلڈ ٹرمپ کے درمیان ہونے والی بات چیت میں بحری بیڑے پر کوئی بات نہیں کی گئی۔