.

جعلی تصویر نے ٹرمپ ، پیوتن اور ایردوآن کو اکٹھا کر دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سوشل میڈیا جہاں خبروں کے لیے ایک اہم ذریعہ بن چکا ہے وہاں یہ جھوٹی خبریں اور جعلی تصاویر پھیلانے میں بھی بھرپور کردار ادا کر رہا ہے۔

جعلی تصاویر کی تازہ ترین مثال جرمنی کے شہر ہیمبرگ میں جمعے اور ہفتے کے روز منعقد ہونے والے جی - 20 سربراہ اجلاس کے دوران لی جانے والی ایک تصویر ہے۔

اصل تصویر میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ ترک وزیر خارجہ مولود چاوش اوگلو کی گفتگو سن رہے ہیں جب کہ اس دوران ترک صدر رجب طیب ایردوآن بھی اپنی نشست پر بیٹھ کر ٹرمپ کی طرح اوگلو کی بات پر دھیان دے رہے ہیں۔

تصویر میں ٹرمپ اور ایردوآن کی نشستوں کے درمیان برطانیہ کی نشست اُس وقت خالی نظر آ رہی ہے۔

البتہ سوشل میڈیا پر فوٹو شاپ کا شوق پورا کرنے والوں کی مہربانی سے مذکورہ تصویر میں برطانیہ کی خالی نشست پر روسی صدر ولادیمر پیوتن برا جمان ہو گئے۔ اس جعل سازی نے تصویر کو دل چسپ بنا دیا اور سوشل میڈیا پر اس کی گردش میں بھی اضافہ ہو گیا۔