.

ترک پولیس کے ہاتھوں داعش کے 5 عسکریت پسند ہلاک

انتہا پسندوں کو قونیا شہر میں ایک مکان پر چھاپے میں ہلاک کیا گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ترک پولیس نے ملک کے وسطی شہر قونیا میں بدھ کے روز ایک مکان پر چھاپے کے دوران داعش کے پانچ مشتبہ عسکریت پسندوں کو ہلاک کر دیا۔ دوگان نیوز ایجنسی کے مطابق اس کارروائی میں چار پولیس اہلکاروں کو معمولی زخم آئے۔

خبر رساں ادارے کے مطابق سپیشل پولیس فورس نے مقامی وقت سو پانچ بجے علی الصباح کارروائی کا آغاز کیا ۔ حکام کے مطابق قونیا کے میرم ضلع میں جس مکان پر چھاپہ مار کارروائی کی گئی وہاں داعش کے عسکریت پسندوں کا ایک سیل حملوں کی منصوبہ بندی کر رہا تھا۔

تصادم کے بعد پولیس کے علاقے کو جانے والے راستے بند کر دیئے اور ہر آنے جانے والی گاڑی کی تلاشی لی جاتی رہی۔ تصادم چھاپہ مار کارروائی کے دوران ہوئے۔ پولیس نے قونیا شہر کے دس مقامات پر ایسی ہی کارروائیاں کیں۔ خبر رساں ایجنسی نے بتایا کہ گھر سے پانچ کلاشنکوف رائفلز اور ایک پستول قبضے میں لیا گیا ہے۔

داعش کے جنگجووں نے ترکی میں متعدد بندوق اور بم حملے کئے ہیں۔ حالیہ برسوں کے دوران ہزاروں غیر ملکی جنگجووں نے عسکریت پسند گروپ کی شام اور عراق میں قائم خود ساختہ خلافت میں شمولیت اختیار کی۔ ان غیر ملکیوں سے شام اور عراق میں داعش کی صفوں میں شمولیت کے لئے ترکی کی سرحد عبور کی۔

ترک حکام کے مطابق انقرہ نے حالیہ چند برسوں کے دوران داعش کے تقریبا 5000 مشتبہ جنگجووں کو گرفتار کیا جبکہ 95 ملکوں سے آنے والے تقریبا 3290 انتہاپسندوں کو بیدخل کیا جا چکا ہے۔