امریکن ایئرلائنز نے قطر ایئرویز کے ساتھ معاہدہ منسوخ کر دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

قطر کی فضائی کمپنی کے چیف ایگزیکٹو اکبر الباکر کی جانب سے دیے گئے بیان کے بعد امریکی فضائی کمپنیوں اور قطر ایئرویز کے درمیان عداوت میں اضافہ ہو گیا ہے۔

امریکی فضائی کمپنی "امریکن ایئرلائنز" نے قطر ایئرویز کے ساتھ کوڈ شیئرنگ سے متعلق معاہدہ منسوخ کرنے کا اعلان کر دیا ہے۔ یہ اقدام قطر ایئرویز کے اُس اعلان کے ایک ماہ بعد سامنے آیا ہے جس میں کہا گیا تھا کہ وہ "امریکن ایئرلائنز" کے 10% شیئرز خریدنے کی منصوبہ بندی کر رہی ہے۔

امریکی فضائی کمپنی کی طرف سے قطر ایئرویز کو حکومتی امداد وصول کرنے پر تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔

واضح رہے کہ قطر ایئرویز کے چیف ایگزیکٹو اکبر الباکر نے چند روز قبل اپنے بیان میں امریکی خواتین فضائی میزبانوں کو "دادیاں" قرار دیا تھا اور اس ساتھ ہی اس امر پر فخر کا اظہار کیا تھا کہ قطر ایئرویز میں خواتین میزبانوں کی عمر 26 برس ہے۔

امریکا میں لیبر یونینوں نے الباکر کے بیان پر سخت غصے کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ عمر کے بڑھنے کا معاملہ صرف عورت نہیں بلکہ دونوں صِنفوں کے ساتھ ہے۔ بعد ازاں قطر ایئرویز کے سربراہ کے پاس امریکی فضائی کمپنیوں سے معذرت کے سوا کوئی چارہ نہیں تھا۔ الباکر نے ذاتی طور پر شہری طیاروں کی خواتین میزبانوں کی تنظیم کی سربراہ سارہ نیلسن کو بھی معذرت پیش کی۔ امریکا میں 20 فضائی کمپنیوں سے تعلق رکھنے والے 50 ہزار ملازمین اس تنظیم کے رکن ہیں۔

ادھر ہوابازوں کی سوسائٹی "ایئرلائن پائلٹ ایسوسی ایشن" کی جانب سے بھی قطر ایئرویز کے سربراہ کے بیان کی شدید مذمت کرتے ہوئے اسے "ایک نئی منطق" قرار دیا۔

امریکی ہوابازی کی ایجنسی نے بدھ کے روز بتایا کہ قطر ایئرویز نے امریکن ایئرلائنز کے حصص کی خریداری کی منصوبہ بندی کے حوالے سے اپنی انتظامی دستاویز پیر کے روز واپس لے لی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں