.

یواے ای نے واشنگٹن پوسٹ کی قطر سے متعلق رپورٹ کو من گھڑت قرار دے دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

واشنگٹن میں متحدہ عرب امارات کے سفارت خانے نے واشنگٹن پوسٹ میں قطر سے متعلق شائع ہونے والی ایک رپورٹ کو جھوٹی اور من گھڑت قرار دے دیا ہے۔

اس رپورٹ میں یہ دعویٰ کیا گیا ہے کہ یو اے ای نے مئی میں قطری حکومت کی ایک ویب سائٹ کو ہیک کرنے کی کارروائی کی تھی۔رپورٹ میں یہ بھی دعویٰ کیا گیا ہے کہ اس کارروائی کا مقصد قطر اور متعدد عرب ممالک کے درمیان بحران پیدا کرنا تھا۔

واشنگٹن میں متعیّن یو اے ای کے سفیر یوسف العتیبہ نے اس رپورٹ کے ردعمل میں ایک ٹویٹ میں کہا ہے کہ ان کے ملک کا اس معاملے سے کوئی لینا دینا نہیں ہے۔واشنگٹن پوسٹ کی رپورٹ میں کسی ذریعے یا عہدہ دار کا کوئی حوالہ نہیں دیا گیا ہے۔

انھوں نے لکھا ہے:’’ جو کچھ درست ہے،وہ قطر کا کردار ہے اور طالبان سے حماس اور قذافی تک کو رقوم کی فراہمی ، ان کی حمایت اور انتہا پسندوں کی صلاحیت کار کو بڑھانا ہے‘‘۔

یوسف العتیبہ نے مزید کہا ہے کہ قطر تشدد کو ہوا دے رہا ہے،سخت گیری کی حوصلہ افزائی کررہا ہے اور اپنے ہمسایہ ممالک کے داخلی استحکام کو نقصان پہنچا رہا ہے۔

یادرہے کہ 24 مئی کو قطری نیوز ایجنسی کی ویب سائٹ پر امیرِ قطر شیخ تمیم بن حمد آل ثانی کی ایک تقریر کے مندرجات پوسٹ کیے گئے تھے۔اس میں انھوں نے ایران کی تعریف کی تھی اور کہا تھا کہ قطر کے اسرائیل کے ساتھ اچھے تعلقات استوار ہیں۔یہ بیان قطری ایجنسی کے ٹویٹر اکاؤنٹ پر بھی جاری کیا گیا تھا۔

قطری ٹیلی ویژن چینل نے بھی شیخ تمیم کی یہ تقریر اپنے خبری بٹنعل کے دوران میں نشر کی تھی اور اس کے چند گھنٹے کے بعد یہ موقف اختیار کیا تھا کہ سرکاری خبررساں ایجنسی کی ویب سائٹ کو ہیک کر لیا گیا ہے۔

قطری ایجنسی نے شیخ تمیم کے بیان کو عربی میں اپنے انسٹاگرام کے اکاؤنٹ پر بھی جاری کیا تھا۔یہ فیس بُک کے اکاؤنٹ کے ساتھ مربوط تھا۔اس کے علاوہ گوگل پلس کے اکاؤنٹ پر بھی اس کو پوسٹ کیا گیا تھا اور پھر ان تمام اکاؤنٹس کو غیر فعال کردیا گیا تھا۔