.

عمر رسیدہ یمنی باشندے کے سبب لیورپول کی سڑکوں پر خوف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

برطانیہ کے شہر لیورپول میں روایتی لباس میں ملبوس کمر پر چھوٹا خنجر لگائے ہوئے ایک یمنی باشندے نے جمعے کے روز سڑک پر چلتے ہوئے برطانویوں کو گھبراہٹ میں مبتلا کر دیا۔

یہ عمر رسیدہ یمنی شہر کی سڑکوں پر واقع دکانوں میں گھوم رہا تھا کہ اس دوران مقامی لوگوں نے اس کے حلیے سے خوف کھانا شروع کر دیا یہاں تک کہ پولیس اہل کاروں نے اس کی کمر پر بندھا ہوا روایتی خنجر اپنے قبضے میں لے لیا۔

واقعے سے متعلق وڈیو میں برطانوی پولیس کو مذکورہ یمنی کے ساتھ پوچھ گچھ کرتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے جب کہ دو دیگر خواتین جن کے ساتھ ایک بچہ بھی تھا.. وہ یمنی شخص کی گفتگو کا پولیس افسران کے لیے ترجمہ کر رہی تھیں۔

مترجم خاتون کے مطابق "یمنی باشندہ ہر جمعے کے روز نماز کے لیے جاتے ہوئے اس خنجر کی بیلٹ کو پہنتا ہے اور 55 برس سے اُس کے ساتھ ہے"۔

یہ خنجر جس کو "الجنبيۃ" بولا جاتا ہے یمن کے مردوں کے روایتی لباس کی زینت مکمل کرتا ہے۔ یمن کے علاوہ سعودی عرب اور سلطنت عمان کے بعض حصوں میں بھی مرد خنجر کو لباس کے حصے کے طور پر استعمال کرتے ہیں۔

واضح رہے کہ یمنی باشندے نے بنا کسی بحث و تکرار کے اپنا خنجر برطانوی پولیس کے حوالے کر دیا۔