.

دہشت گردی کے بارے میں ہماری ’’زیرو ٹالرینس‘‘ پالیسی ہے: سعودی وزیر خارجہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی وزیر خارجہ عادل الجبیر نے کہا ہے کہ ہم دہشت گردی اور انتہا پسندی سے پختہ عزم کے ساتھ نمٹنا چاہتے ہیں اور دہشت گردی سے نمٹنے کے لیے ہماری کسی سے رو رعایت نہ برتنے کی پالیسی ہے۔

انھوں نے یہ بات برسلز میں اپنے بیلجیئن ہم منصب سے جمعرات کو ملاقات کے بعد ایک نیوز کانفرنس میں کہی ہے۔العربیہ نیوز چینل کی رپورٹ کے مطابق عادل الجبیر نے کہا کہ ’’ ہم نے تعمیری بات چیت کی ہے اور یورپ کے ساتھ مزید گہرے تعلقات استوار کرنا چاہتے ہیں‘‘۔

انھوں نے کہا کہ قطر کا بائیکاٹ کرنے والے ممالک یہ چاہتے ہیں کہ دوحہ دہشت گردوں کو پناہ دینے،ان کی مالی معاونت کرنے اور انھیں شہ دینے سے باز آجائے۔

انھوں نے مزید کہا کہ ’’ قطر سے ہمارے مطالبات دہشت گردی کے خلاف عالمی جنگ کے لیے بین الاقوامی پالیسیوں کے دائرہ کار ہی میں رہ کر کیے گئے ہیں‘‘۔عادل الجبیر کا کہنا تھا کہ ’’دہشت گردی اور اس کے مالی ذرائع کے بارے میں ہم نے زیرو ٹالرینس کی پالیسی اختیار کررکھی ہے‘‘۔