.

سعودی فوجی سرحدی صوبے عسیر میں بارودی سرنگ کے دھماکے میں جاں بحق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے سرحدی صوبے عسیر میں بارودی سرنگ کے دھماکے میں شدید زخمی ہونے والا ایک فوجی جان کی بازی ہار گیا ہے۔

سعودی عرب کی ووزارت داخلہ کے ایک سکیورٹی ترجمان نے بتایا ہے کہ اتوار کی صبح مقامی وقت کے مطابق صبح سات بجے صوبہ عسیر میں واقع سرحدی چوکی مسیل کے نزدیک معمول کی گشت کے دوران ایک فوجی یونٹ بارودی سرنگ کے دھماکے کی زد میں آگیا جس کے نتیجے میں ایک فوجی عاطی بن مرداد الجدعانی شدید زخمی ہوگئے اور وہ بعد میں اپنی زخموں کی تاب نہ لا کر چل بسے ہیں۔

صوبہ عسیر یمن کی سرحد کے ساتھ واقع ہے اور سرحد پار سے حوثی شیعہ باغی سعودی سکیورٹی فورسز کی جانب گولہ باری کرتے رہتے ہیں۔اس سال کے اوائل میں حوثی ملیشیا نے عسیر میں اقوام متحدہ کی ایک عمارت کو بھی نشانہ بنایا تھا جس کے نتیجے میں یہ عمارت تباہ ہوگئی تھی۔