لبنانی حزب اللہ کے بعد ’امریکی حزب اللہ لشکر‘ کا ظہور!

نام نہاد امریکی حزب اللہ کا پہلا دھمکی آمیز بیان بھی جاری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

لبنان کی ایران نواز شیعہ ملیشیا حزب اللہ کی طرز پر امریکا میں بھی ’امریکی حزب اللہ لشکر‘ کےنام سے ایک نیا گروپ سامنے آیا ہے۔ ایرانی ذرائع ابلاغ کے مطابق امریکی ریاست لاس اینجلس میں حزب اللہ کے نام سے ظاہر ہونے والے گروپ نے فارسی زبان میں دھمکی آمیز پیغام بھی جاری کیا ہے جس میں امریکی حکومت سے کہا گیا ہے کہ وہ خلیج عرب سے اپنی فوج واپس بلائے ورنہ وہ امریکی مفادات کو اس کے اندر نقصان پہنچائے گے۔

ایران کی فارسی خبر رساں ایجنسی ’ایران شہر‘ نے امریکی ریاست لاس اینجلس میں قائم دفتر میں اپنی ویب سائیٹ پر امریکا میں سامنے آنے والے حزب اللہ لشکر کا بیان شائع کیا ہے۔

ویب سائیٹ پر جاری کردہ بیان میں 22 مارچ 2017ء کی تاریخ درج ہے تاہم اسے بدھ چھبیس جولائی کو لاس اینجلس میں ایرانی اکثریتی علاقے میں تقسیم کیا گیا۔ یہ بیان ایک ایسے وقت میں تقسیم کیا گیا ہے جب کہ امریکی کانگریس نے حزب اللہ اور ایرانی پاسداران انقلاب پر نئی اقتصادی پابندیاں عاید کی ہیں۔

امریکی حزب اللہ لشکر نے خلیج عرب میں موجود امریکی فوج کو خبردار کیا ہے کہ وہ وہاں سے نکل جائے ورنہ امریکی دہشت گردی کا جواب امریکا کے اندر دیا جائے گا۔

امریکی حزب اللہ کے بیان میں بین الاقوامی سطح پر مشہور اصطلاحات استعمال کی گئی ہیں۔ ان میں امریکا پر عالمی صہیونیوں کی پشت پناہی کا الزام، عالم تکبر وغیرہ جیسی اصطلاحات کے ساتھ خبردار کیا گیا ہے کہ مشرق وسطیٰ کی اقوام خلیج میں موجود امریکی فوج کے خلاف بھرپور مزاحمت کرسکتی ہیں۔

لاس اینجلس میں’امریکی حزب اللہ فوج‘ کے بیان کے منظرعام پر آنے کے بعد مقامی شہریوں نے پولیس اور ایف بھی آئی کو اس کے بارے میں مطلع کیا ہے۔ پولیس نے مشتبہ دہشت گرد گروپ اوراس سے وابستہ عناصر کی چھان بین شروع کردی ہے۔

یاد رہے کہ حال ہی میں ایران کے ایک شدت پسند لیڈر حسن عباسی نے کہا تھا کہ ایران نے امریکا کے اندر کارروائیوں کے لیے بھی اپنے سیل قائم کیے ہیں۔

خیال رہے کہ ایران میں سنہ 1979ء میں برپا ہونے والے ولایت فقیہ کے انقلاب کے بعد مختلف عرب اور مسلمان ملکوں میں حزب اللہ کے نام سے عسکری، سیاسی اور سماجی گروپ سامنے آئے۔ مسلمان اورعرب ملکوں کے مقامی شیعہ عناصر نے ایرانی انقلاب کو درآمد کرنے کے لیے حزب اللہ جیسے گروپوں کے قیام کا سہارا لیا۔ اس ضمن میں لبنانی حزب اللہ سب سے بڑا عسکری گروپ ہے۔ اس کے علاوہ کئی عرب اور مغربی ملکوں میں بھی حزب اللہ گروپ بنائے گئے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں