.

مجمع عام میں موریتانوی وزیر پرجوتے سے حملہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

افریقی ملک موریتانیہ کے وزیرخزانہ واقتصادیات کو بھرے مجمع میں ایک شخص نے جوتا دے مارا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق وزیرخزانہ المختار ولد اجائی کو جلسہ عام میں جوتا مارے جانے کی ایک فوٹیج سوشل میڈیا پر وائرل ہے۔ ذرائع ابلاغ کے مطابق وزیر موصوف کو جوتا اس وقت مارا گیا جب وہ نواکشوط میں آئین میں ترمیم کی حمایت میں منعقد کردہ ایک جلسہ عام سے خطاب کررہے تھے۔ اس دوران مجمع میں سے ایک شخص نے ان پرجوتا اچھال دیا، جوتا ان کے سر کو چھو کرگذرا تاہم انہوں نے اس واقعے کو نظرانداز کرتے ہوئے اپنی تقریر جاری رکھی۔ پولیس نے جوتا مارنے والے شخص کو حراست میں لے لیا ہے۔

خیال رہے کہ موریتانیہ کے وزیر خزانہ و اقتصادیات دستور میں ترمیم کی مہم چلا رہے ہیں۔ اس مہم کے لیے انہیں صدر مملکت کی طرف سے رابطہ کار مقرر کیا گیا ہے۔ وہ آئین میں ترمیم کے حوالے سے رائے عامہ ہموار کرتے کے لیے عوامی جلسوں سے خطاب کرتے ہیں۔

مبصرین اور سماجی کارکنوں کا کہنا ہے کہ وزیر کو جوتا پڑنے سے ظاہر ہوتا ہے کہ موریتانیہ میں عوام دستور میں ترمیم کی حمایت نہیں کرتے۔ بعض نے اسے غیر اخلاقی، نامناسب اور احمقانہ طریقہ احتجاج قرار دیا ہے۔