.

قطر دہشت گردی کے لیے رقوم مہیا کرنے میں ملوّث ہے : مصر

خلیجی ریاست نے خطے کو عدم استحکام سے دوچار کرنے کی پالیسی اختیار کررکھی ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر نے قطر کے خلاف اس الزام کا اعادہ کیا ہے کہ وہ دہشت گرد گروپوں کو رقوم مہیا کرتارہا ہے اور اس نے خطے کے ممالک میں دہشت گردی کی حمایت کی پالیسی اختیار کررکھی ہے۔

یہ بات مصر کے اقوام متحدہ میں مستقل مندوب عمرو ابو العطا نے قطر کے اس بیان کے جواب میں کہی ہے جس میں اس نے یہ الزام عاید کیا تھا کہ مصر عالمی ادارے کی انسداد دہشت گردی کمیٹی کی چئیرمین شپ کو اپنے سیاسی مقاصد کے لیے استعمال کررہا ہے اور پرانے بدلے چکا رہا ہے۔

مصر نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں ایک سرکاری دستاویز پیش کی ہے اور اس میں اس نے یہ وضاحت کی ہے کہ وہ انسداد دہشت گردی کمیٹی کی سربراہی کے ذریعے قطر کی جانب سے دنیا بھر میں دہشت گرد گروپوں کے لیے مالی اور نظریاتی حمایت کو بے نقاب کررہا ہے۔

اس نے اپنے جواب میں کہا ہے کہ قطر کی سرگرمیوں کا مقصد نہ صرف دہشت گردی مخالف چار ممالک سعودی عرب ، مصر ، متحدہ عرب امارات اور بحرین بلکہ پورے خطے ہی کو عدم استحکام کا شکار کرنا تھا۔اس نے مزید کہا ہے کہ قطر کی شکایت مکمل طور پر جھوٹ کا پلندا ہے۔

مصری مشن نے قطر پر دہشت گردی کی حمایت اور خطے اور دنیا کے ممالک میں مداخلت کی پالیسی اختیار کرنے کے الزام کا اعادہ کیا ہے اور یہ بات بالاصرار کہی ہے کہ بہت سے ممالک کو دوحہ کی پالیسیوں کا براہ راست یا بالواسطہ خمیازہ بھگتنا پڑا ہے۔اس نے مزید کہا ہے کہ چاروں عرب ممالک نے بین الاقوامی قانون کی تصریحات کے عین مطابق اپنے دفاع کے لیے قطر کے خلاف اجتماعی اقدامات کیے ہیں۔