.

شمالی کوریا کی دھمکی کی زد میں امریکی جزیرہ گوام ؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

وہائٹ ہاؤس کی جانب سے اعلان کیا گیا ہے کہ امریکی افواج " گُوام" جزیرے کے تحفظ کے لیے تیار ہیں۔ یہ اعلان شمالی کوریا کی اُس دھمکی کے بعد سامنے آیا ہے جس میں پیونگ یانگ نے کہا تھا کہ وہ بحر الکاہل میں واقع امریکی جزیرے کی جانب بیسلٹک میزائل داغے گا۔

اس حوالے سے امریکا اور شمالی کوریا کے درمیان زبانی جنگ اور شعلہ انگیز بیانات کا سلسلہ جاری ہے۔ تاہم ہم دیکھتے ہیں کہ یہ جزیرہ کیا ہے اور اس کی اہمیت کہاں چھپی ہوئی ہے ؟

جغرافیائی طور پر گُوام جزیرہ امریکا کی اراضی سے بہت دُور واقع ہے۔ اگرچہ رقبے کے لحاظ سے یہ جزیرہ دارالحکومت واشنگٹن سے محض تین گُنا بڑا ہے تاہم اس کی عسکری اہمیت بہت زیادہ ہے۔

امریکا اور ہسپانیہ کے درمیان جنگ کے اختتام کے بعد ہسپانیہ اپنی سابقہ سامراجی کالونی سے دست بردار ہوگیا اور 1898ء سے یہ جزیرہ امریکا کے کنٹرول میں ہے۔

گُوام میں تقریبا 1.62 لاکھ افراد بستے ہیں جن میں 37% یہاں کے اصلی باشندے ہیں۔ یہاں کے لوگ کئی زبانیں بولتے ہیں جن میں انگریزی ، فلپینی اور یہاں کے اصلی باشندوں کی زبان چامورو سرفہرست ہے۔

جزیرے میں صرف 50 مسلمان رہتے ہیں۔ ان میں 5 اصلی باشندے اور 3 عرب (سعودی مصری اور الجزائری) ہیں جب کہ بقیہ مسلمان بنگلہ دیشی اور سری لنکن نژاد ہیں۔

فوجی اڈہ

بحر الکاہل میں واقع جزیرے گُوام کو ویتنام کی جنگ کے دوران بڑی اہمیت حاصل ہوئی۔ یہ B-52 طیاروں کا اڈہ تھا جنہوں نے جنوب مشرقی ایشیا میں کارروائیاں کیں۔ علاوہ ازیں یہ جزیرہ ویتنامی پناہ گزینوں کو نکالنے کے لیے بطور مرکز بھی استعمال کیا جاتا تھا۔

گُوام میں اینڈرسن فضائی اڈہ واقع ہے جو 1944 میں تعمیر کیا گیا۔ اُس دوران امریکا دوسری جنگ عظیم کے دوران جاپان کو نشانہ بنانے کے واسطے لانچروں کو بھیجنے کی تیاری کر رہا تھا۔ اڈے میں امریکی بحریہ کے ہیلی کاپٹروں کا اسکواڈرن اور ایندھن اور گولہ بارود کے بڑے ڈپو بھی موجود ہیں۔

جزیرے پر گُوام بحری اڈہ بھی واقع ہے جس کو 1898 میں بنایا گیا۔ اس بحری اڈے میں چار نیوکلیئر پاور حملہ آور آبدوزوں کے لیے بندرگاہ شامل ہے۔

گُوام میں میزائل شکن نظام بھی موجود ہے جو مختصر اور درمیانی مار کے میزائلوں کو فضا میں تباہ کرنے کی قدرت رکھتا ہے۔

جزیرے پر سات ہزار کے قریب فوجی تعینات ہیں جن میں اکثریت بحریہ اور فضائیہ سے تعلق رکھتے ہیں۔ امریکا نے جاپان کے انتہائی جنوب میں واقع صوبے اوکیناوا میں موجود اپنے ہزاروں فوجی اہل کاروں کو گُوام منتقل کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

اقتصادی لحاظ سے گُوام کی مرکزی آمدن کا انحصار امریکی فوجی وجود اور عسکری اخراجات پر ہے تاہم سیاحت کا بھی جزیرے کی معیشت میں اہم کردار ہے۔

سال 2016 میں 15 لاکھ سے زیادہ افراد نے گُوام جزیرے کا رُخ کیا جن میں زیادہ تر کا تعلق جاپان اور جنوبی کوریا سے تھا۔