.

سعودی عرب سے 7 لاکھ سے زیادہ غیر قانونی تارکینِ وطن کی واپسی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب سے گذشتہ کچھ عرصے کے دوران میں سات لاکھ سے زیادہ غیر قانونی تارکین ِوطن معافی کی اسکیم کے تحت اپنے آبائی ممالک کو واپس چلے گئے ہیں۔

سعودی عرب کی عمومی نظامت برائے پاسپورٹس کے ڈائریکٹر، میجر جنرل سلیمان بن عبدالعزیز الیحییٰ نے بتایا ہے کہ یہ تارکینِ وطن ،ویزے اقامت اور ملازمت کے قواعد وضوابط کی خلاف ورزیوں کے مرتکب پائے گئے تھے اور انھیں ’’ خلاف ورزی کے مرتکبین کے بغیر قوم‘‘ کی مہم کے تحت واپس بھیجا گیا ہے ۔

انھوں نے مزید بتایا ہے کہ مزید غیر قانونی تارکین وطن بھی اس مہم سے فائدہ اٹھا کر واپس جا سکتے ہیں اور اگلے مرحلے میں مزید چھیالیس ہزار غیر قانونی تارکین وطن کو سعودی عرب سے ان کے ممالک کو واپس بھیجا جائے گا۔

واضح رہے کہ اس ایمنسٹی مہم کی مدت جولائی کے آغاز میں ختم ہوگئی تھی اور سعودی حکام نے اس کے بعد دوسرے مرحلے پر بھی کام شروع کردیا تھا۔اس کے تحت خلاف ورزیوں کے مرتکبین کو تلاش کیا جارہا ہے ۔ ان پر متعلقہ قواعد وضوابط کا اطلاق کیا جارہا ہے اور انھیں واپس بھیجنے کا بندوبست کیا جارہا ہے۔