.

شاہ سلمان کے فرمان کے بعد 120قطری عازمین حج کی سعودی عرب آمد

قطری وزیر خارجہ کا دونوں ملکوں کے درمیان سرحد کھولنے سے متعلق سعودی فیصلے کا خیر مقدم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

خادم الحرمین الشریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز کے فیصلے کے بعد قطری عازمین ِ حج کا پہلا قافلہ سرحدی گذرگاہ سلویٰ کے ذریعے سعودی عرب میں داخل ہوگیا ہے۔ذرائع کے مطابق 120 قطری عازمین جمعرات کو شاہ سلمان کے مہمان کی حیثیت سے برّی راستے سے سعودی عرب پہنچے ہیں۔

درایں اثناء قطری وزیر خارجہ شیخ محمد بن عبدالر حمان آل ثانی نے سعودی عرب کے عازمین ِحج کے لیے دونوں ملکوں کے درمیان زمینی سرحدیں کھولنے کے فیصلے کا خیرمقدم کیا ہے۔وہ اسٹاک ہوم میں ایک نیوز کانفرنس میں گفتگو کررہے تھے۔

سعودی ذرائع کے مطابق شاہ سلمان کے حکم کے بعد قطری عازمین حج کے مملکت میں داخلے اور انھیں حج کے لیے ہر ممکن سہولت مہیا کرنے کی غرض سے تمام ضروری اقدامات کر لیے گئے ہیں اور آیندہ دنوں میں زمینی راستے سے آنے والے قطری عازمین حج کی تعداد میں اضافہ متوقع ہے۔

قبل ازیں شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے برقی اجازت نامے نہ رکھنے والے حج کے خواہاں قطریوں کو دونوں ملکوں کے درمیان سرحدی گذرگاہ سے سعودی عرب میں داخل ہونے کی اجازت دینے کا فرمان جاری کیا تھا۔سعودی پریس ایجنسی کی اطلاع کے مطابق یہ فیصلہ قطر کے حکمراں خاندان کی ایک شخصیت شیخ عبداللہ بن علی بن عبداللہ بن جاسم آل ثانی کی ثالثی کی کوششوں کے نتیجے میں کیا گیا تھا۔

برّی راستے سے آنے والے قطری عازمین حج کو الدمام کے شاہ فہد بین الاقوامی ہوائی اڈے اور الاحساء کے بین الاقوامی ہوائی اڈے سے پروازوں کے ذریعے جدہ یا مدینہ منورہ منتقل کیا جائے گا۔ شاہ سلمان نے انھیں کسی خرچ کے بغیر لانے کی ہدایت کی ہے اور قطری عازمین کے تمام حج اخراجات شاہ سلمان بن عبدالعزیز آل سعود کے پروگرام برائے حج وعمرہ کے تحت برداشت کیے جائیں گے۔

مزید برآں شاہ سلمان نے سعودی ائیر لائنز کی خصوصی پروازیں دوحہ بھیجنے کا بھی حکم دیا ہے اور ان کے ذریعے وہاں سے قطری عازمین کو براہ راست جدہ لے جایا جائے گا۔ ان تمام کے سفری اخراجات بھی شاہ سلمان خود برداشت کریں گے۔