.

یمنی باغیوں کی دہشت گردی، نوجوان کا اہل خانہ کے سامنے قتل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں حکومت کا تختہ الٹنے والے حوثی باغیوں علی صالح ملیشیا کی دہشت گردی جاری ہے۔ گذشتہ روز باغی دہشت گردوں نے یمن کی سرکاری فوج کے ساتھ تعاون کے الزام میں ایک نوجوان کو اس کے اہل خانہ کی موجودگی میں گولیاں مار کر قتل کردیا گیا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق مقامی ذرائع کا کہنا ہے کہ باغیوں نے مغربی گورنری تعز میں الخا ڈاریکٹوریٹ کے نواحی قصبے المشقر میں علی عبداللہ سالم حبیش کو اس کے اہل خانہ کے سامنے گولیاں مار کر قتل کردیا۔ باغیوں نے مقتول پر یمن کی سرکاری فوج اور سعودی عرب کی قیادت میں قائم عرب اتحادی فوج کے ساتھ تعاون کا الزام عاید کیا گیا تھا۔

یہ مجرمانہ واقعہ اپنی نوعیت کا پہلا کیس نہیں۔ ایک ہفتہ قبل بھی یمنی باغیوں نے تعز کے علاقے الوزاعیہ میں ایک معمر اور معذور شہری علی سعید الاغبری کو سرے عام پھانسی کےگھاٹ اتار دیا تھا۔ علی سعید پر بھی سرکاری فوج کے ساتھ تعاون کا الزام عاید کیا گیا تھا۔