بھارتی کابینہ میں اہم تبدیلیاں، پہلی مرتبہ خاتون وزیر دفاع کا تقرر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

بھارتی وزیراعظم مودی نے اپنی کابینہ میں ردوبدل کی ہے۔ بھارتی پارلیمنٹ کے ایوانِ زیریں کی ایک خاتون رکن نرملا سیتا رمن کو وزارتِ دفاع کا قلمدان سونپا گیا ہے۔ قبل ازیں بھارتی وزیر خزانہ ہی دفاع کی وزارت بھی سنبھالے ہوئے تھے۔

نرملا سیتا رمن وزیر دفاع بننے والی دوسری اور اس عہدے کا آزادانہ چارج لینے والی پہلی خاتون ہیں۔ اس سے قبل 1982 میں سابق وزیر اعظم اندرا گاندھی کے پاس وزارت دفاع کا اضافی چارج تھا۔

نئے وزیر دفاع کی تعیناتی ایسے وقت میں کی گئی ہے جب بھارت کی اپنے ہمسایہ ملکوں چین اور پاکستان کے ساتھ سرحدی کشیدگی پیدا ہے۔ کوہِ ہمالیہ میں بھوٹان کی سرحد کے قریب چین کے ساتھ کشیدگی میں بظاہر کمی واقع ہو چکی ہے۔

وزارت دفاع کا قلمدان منوہر پریکر کے استعفیٰ دے کر گوا کا وزیر اعلی بننے کے بعد خالی ہوا تھا۔ وزیر مالیات ارون جیٹلی کو دفاع کا اضافی چارج دیا گیا تاہم انھوں نے پچھلے دنوں اشارہ دیا تھا کہ وہ اب یہ ذمہ داری انجام دینا نہیں چاہتے۔

اس سے قبل 58 سالہ سیتا رمن صنعت و تجارت کی وزیر تھیں۔ ان کے پاس سیاست و وزارت کا زیادہ تجربہ نہیں ہے۔ وہ 2006 میں بی جے پی میں شامل ہوئی تھیں اور 2014 میں مرکز میں بی جے پی کی حکومت بننے کے بعد پہلی بار وزیر مقرر کی گئیں۔ گویا ان کے پاس وزارت کا صرف تین سال کا تجربہ ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں