.

تیونس کی کابینہ میں بڑے پیمانے پر ردو بدل کا فیصلہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

تیونس کے وزیر اعظم یوسف الشاہد نے کابینہ میں وسیع پیمانے پر تبدیلیوں کا اعلان کیا ہے۔ کئی اہم وزراء کے قلمدان تبدیل کیے جا رہے ہیں۔ وزارت داخلہ اور دفاع کے لیے بھی نئے وزیر مقرر ہوں گے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق تیونسی وزیر اعظم نے صدر الباجی قاید السبسی سے ملاقات کے بعد کہا کہ ’میں نے کابینہ میں بڑے پیمانے پر تبدیلیوں کا فیصلہ کیا ہے۔ نئے وزراء کی فہرست جاری کردہ گئی ہے۔ بعض وزراء کو ان کے سابقہ عہدوں پر بحال رکھا گیا ہے، جب کہ کئی نئے چہرے سامنے لائے گئے ہیں۔

تیونسی حکومت کے ذرائع کے مطابق وزارت داخلہ، دفاع، خزانہ اور ترقی سمیت 10 وزراء کے قلم دان تبدیل کیے جا رہے ہیں۔ کابینہ میں تبدیلی ملک میں اقتصادی اصلاحات کے عمل میں تیزی لانا ہے۔

وزیر اعظم یوسف الشاھد نے ’نداء تیونس‘ کے مقرب اور وزیراعظم کے سابق اسٹاف افسر رضا شلغوم کو وزارت خزانہ، عین لطفی براہم کو وزیر داخلہ، تحریک النٰہضہ سے وابستہ توفیق الراجحی کو وزیر برائے اقتصادی اصلاحات، عبدالکریم زبیدی کو فرحات الحرشانی کی جگہ وزیر دفاع کا منصب سونپا جا رہا ہے۔ زبیدی 2011ء سے 2013ء کے دوران بھی اس عہدے پر فائز رہ چکے ہیں۔

کئی وزراء اپنے پرانے عہدوں پر بدستور قائم ہیں۔ ان میں وزیرخارجہ خمیس الجینھاوی، وزیرانصاف غازی الجریبی، خاتون وزیر سیاحت سلمیٰ اللومی، وزیر برائے ٹیکنالونی انور معروف اور وزیر زراعت سمیر الطیب اپنے عہدوں پر قائم ہیں۔ تاہم ٹرانسپورٹ، ترقی وسماجی بہبود، محنت، تعلیم اور تجارت کی وزارتوں پر نئے وزیروں کا تقرر کیا گیا ہے۔