.

شام کی لڑائی میں کسی فریق کی ہار جیت نہیں: دی میستورا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کے لیے اقوام متحدہ کے خصوصی ایلچی اسٹیفن دی میستورا نے کہا ہے کہ میں شام میں جاری لڑائی میں حکومت اور اپوزیشن کے درمیان کسی کی ہار یا جیت پر یقین نہیں رکھتا۔ انہوں نے شامی اپوزیشن پر زور دیا کہ وہ زمینی حقائق کا ادراک کرتے ہوئے یہ سمجھ لے کہ جنگ میں کسی فریق کی ہار یا جیت نہیں۔

ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے دی میستورا نے کہا کہ ’میں شام میں جاری کشمکش کا مورخ نہیں مگر فی الوقت میں یہ فیصلہ کرنے سے قاصر ہوں کہ جنگ میں کس کو فاتح اور کس کو شکست خوردہ قرار دوں‘۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ اگرچہ اسد رجیم نے عسکری محاذ پر پیش قدمی ہے مگر ملک میں جاری جنگ کا حل صرف فوجی نہیں۔ دائمی اور دیرپا امن کے قیام کے لیے بات چیت کے سوا کوئی چارہ نہیں ہوگا۔

دی میستورا نے توقع ظاہر کی کہ ادلب میں شامی حکومت فوجی آپریشن سے گریز کرے گی۔ ان کا کہنا تھا کہ توقع ہے کہ اسد رجیم ادلب کو دوسرا حلب بنانے کی پالیسی نہیں اپنائے گی۔