.

اسرائیلی وزیراعظم کی اہلیہ کو سرکاری خزانے کے ذاتی استعمال پر فرد ِجُرم کا سامنا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیل کے اٹارنی جنرل وزیراعظم بنیامین نیتن یاہو کی اہلیہ سارہ کے خلاف سرکاری خزانے سے رقوم کو ذاتی مقاصد کے لیے استعمال میں لانے کے الزام میں فرد جرم عاید کرنے پر غور کررہے ہیں۔

اسرائیل کی وزارت انصاف کے مطابق خاتون اول سارہ نیتن یاہو پر قومی خزانے کو قریباً ایک لاکھ ڈالرز کا نقصان پہنچانے کا الزام ہے۔انھوں نے یہ رقم شاہانہ کھانوں اور کراکری پر اڑائی تھی۔اٹارنی جنرل ان کے خلاف فراڈ اور دھوکا دہی سے کھانوں اور برتنوں کی خریداری اور اعتماد کو ٹھیس پہنچانے کے الزام میں مقدمہ چلانے پر غور کررہے ہیں۔

اٹارنی جنرل اویشائی مینڈل بلٹ کی جانب سے اس ضمن میں ممکنہ اعلان سے قبل ہی جمعرات کو وزیراعظم کے فیس بُک صفحے پر ایک بیان پوسٹ کیا گیا ہے اور اس میں یہ کہا گیا ہے کہ ’’ سارہ نیتن یاہو کے خلاف الزامی دعوے مضحکہ خیز ہیں اور یہ (تحقیقات کے بعد )بے بنیاد ثابت ہوں گے‘‘۔