لندن : میٹرو ٹرین پر بم حملے کے الزام میں دوسرا مشتبہ شخص گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

لندن میں برطانوی پولیس نے میٹرو ٹرین پر بم حملے کےالزام میں ایک اور مشتبہ شخص کو انسداد دہشت گردی ایکٹ کے تحت گرفتار کر لیا ہے۔

میٹرو پولیٹن پولیس نے ایک بیان میں کہا ہے کہ اس اکیس سالہ مشتبہ نوجوان کو لندن کے نواحی مغربی علاقے ہونسلو سے ہفتے کی رات گرفتار کیا گیا ہے اور اس کو جنوبی لندن کے ایک پولیس اسٹیشن میں منتقل کردیا گیا ہے۔

قبل ازیں پولیس نے ہفتے کے روز ایک اٹھارہ سالہ نوجوان کو زیر زمین میٹرو ٹرین میں بم دھماکے کے الزام میں گرفتار کیا تھا۔جمعے کی صبح کسی نے ایک میٹرو ٹرین میں یہ گھریلو ساختہ بم نصب کردیا تھا اور اس کے پھٹنے سے انتیس افراد زخمی ہوگئے تھے۔داعش نے اس بم حملے کی ذمے داری قبول کرنے کا دعویٰ کیا تھا اور گذشتہ چھے ماہ میں برطانیہ میں دہشت گردی کا پانچواں حملہ تھا۔

برطانوی وزیراعظم تھریزامے نے دہشت گردی کے اس واقعے کے بعد ملک میں خطرے کی سطح بڑھا کر ’’ انتہائی‘‘ کردی تھی اور کہا تھا کہ اب فوجیوں کو اہم تنصیبات پر پہرے کے لیے تعینات کیا جائے گا اور وہاں سے فارغ ہونے والے قریباً ایک ہزار پولیس افسر وں کو ٹرانسپورٹ نیٹ ورکس اور شاہراہوں پر تعینات کیا جائے گا۔

سکیورٹی ماہرین کا کہنا ہے کہ پارسنز گرین ٹیوب اسٹیشن بم حملے کا ہدف نہیں تھا اور حملہ آور کسی اور زیادہ مصروف اور بڑےاسٹیشن کو نشانہ بنانا چاہتے تھے۔انٹرنیشنل کارپوریٹ پروٹیکشن نامی سکیورٹی فرم کے بانی ول گیڈس کا کہنا ہے کہ پیڈنگٹن یا ویسٹ منسٹر جیسے بڑے اسٹیشن دہشت گردی کے حملے کا ہدف ہوسکتے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں