.

لندن : میٹرو ٹرین پر بم حملہ کرنے والے شامی مہاجر کی شناخت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

برطانوی پولیس نے لندن میں میٹرو ٹرین پر بم حملہ کرنے والے مشتبہ ملزم کی شناخت جاری کردی ہے۔ اس کا نام یحییٰ فاروق ہے،اس کی عمر اکیس سال ہے اور یہ شامی مہاجر ہے۔

یحییٰ فاروق کو چار خفیہ پولیس اہلکاروں نے اس کے ایک دوست فرائیڈ چکن ریستوراں سے پکڑا تھا۔اس کی گرفتاری کلوز سرکٹ ٹی وی کی فوٹیج کی مدد سے عمل میں آئی تھی۔اس میں اس کو بم حملے کے لیے جاتے ہوئے دیکھا جاسکتا تھا۔

برطانوی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق یہ فوٹیج دریائے ٹیمز کے کنارے واقع سن بری میں ایک مکان پر نصب کیمروں کے ذریعے بنی تھی۔اس میں اس مشتبہ حملہ آور کو جمعہ کی صبح بم دھماکے سے صرف دو گھنٹے قبل ایک تھیلا لے جاتے ہوئے دیکھا جاسکتا ہے۔

یہ مشتبہ شامی مہاجر سرے میں ایک برطانوی جوڑے ران اور پینی جونز کے ہاں مہمان کے طور پر رہ رہا تھا۔پولیس نے ہفتے کے روز ان کے مکان میں چھاپا مار کارروائی کی تھی اور اس کی میٹل سکریننگ بھی کی تھی۔ان کے بعض ہمسایوں نے دعویٰ کیا ہے کہ پولیس کو اس مکان سے دھماکا خیز مواد بھی ملا تھا۔

لندن پولیس نے میٹرو ٹرین پر بم حملے کےالزام میں اب تک دو مشتبہ افراد کو انسداد دہشت گردی ایکٹ کے تحت گرفتار کیا ہے۔ابھی تک دوسرے مشتبہ شخص کی شناخت نہیں بتائی گئی ہے۔جمعے کی صبح لندن کے پارسنز گرین ٹیوب اسٹیشن پر ایک میٹرو ٹرین میں گھریلو ساختہ بم کے پھٹنے سے انتیس افراد زخمی ہوگئے تھے۔

داعش نے اس بم حملے کی ذمے داری قبول کرنے کا دعویٰ کیا تھا اور گذشتہ چھے ماہ میں برطانیہ میں دہشت گردی کا یہ پانچواں حملہ تھا۔ سکیورٹی ماہرین کا کہنا ہے کہ حملہ آور کسی اور مگر زیادہ مصروف اور بڑےاسٹیشن کو نشانہ بنانا چاہتے تھے۔

برطانوی وزیراعظم تھریزامے نے دہشت گردی کے اس واقعے کے بعد ملک میں خطرے کی سطح بڑھا کر ’’ انتہائی‘‘ کردی تھی اور کہا تھا کہ اب فوجیوں کو اہم تنصیبات پر پہرے کے لیے تعینات کیا جائے گا اور وہاں سے فارغ ہونے والے قریباً ایک ہزار پولیس افسر وں کو ٹرانسپورٹ نیٹ ورکس اور شاہراہوں پر تعینات کیا جائے گا۔