یمنی فوج کی کارروائی میں ابین میں دو القاعدہ کمانڈر ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

عرب اتحادی فوج کی حمایت یافتہ یمن کی آئینی فوج نے ملک کے جنوبی علاقے ابین میں شدت پسند گروپ القاعدہ کے خلاف آپریشن میں تنظیم کے دو مقامی امراء کو ہلاک کردیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق یمنی فوج کا کہنا ہے کہ گذشتہ روز الوضیع ڈاریکٹوریٹ کے نواحی علاقے آل شمیل سے ایک ویران اور کچے مکان سے القاعدہ کے مقامی امیر کمانڈر الخضر علی باصریع المعروف ابو العباس کی لاش ملی کمانڈر ابو العباس کو گذشتہ روز ابین میں دہشت گردی کے خلاف جاری آپریشن کے دوران ایک کارروائی میں ہلاک کیا گیا تھا۔

مقامی ذرائع کے مطابق سیکیورٹی فورسز نے مقتول القاعدہ جنگجو کی لاش اس کے ورثاء کے حوالے کردی جنہوں نے اسے اس کے آبائی علاقے الکورہ میں دفن کردیا۔

خیال رہے کہ کمانڈر باصریع کو وسطی ابین کے علاقوں میں القاعدہ کا اہم کمانڈر اور تنظیم کا شرعی مفتی قرار دیا جاتا تھا۔

ادھر اسی سیاق میں ایک دوسری پیش رفت میں سیکیورٹی فورسز نے بتایا کہ ابین گورنری کے لودر ڈاریکٹوریٹ میں الحضن کے مقام پر فورسز نے القاعدہ کے مقامی امیرمحمد صالح العوسجی کو اس کے ٹھکانے پر کارروائی کے دوران ہلاک کیا ہے۔

سیکیورٹی ذرائع کے مطابق فورسز نے دہشت گرد تنظیم کے کمانڈر کی ایک گھر میں موجودگی کی اطلاع پر اس مکان کا گھیراؤ کیا جس کے بعد مکان میں موجود شدت پسند اور فورسز میں فائرنگ کا بھی تبادلہ ہوا۔ سیکیورٹی فورسز نے فائرنگ کر کے القاعدہ کمانڈر کو ہلاک کردیا۔

العوسجی کو ابین میں الحضن کے علاقے کا القاعدہ کا امیر بنایا گیا تھا۔ یمنی فوج نے کارروائی کے بعد مقتول القاعدہ جنگجو کی لاش کی تصویر بھی جاری کی تھی تاہم العربیہ ڈاٹ نیٹ اسے شائع کرنے سے معذرت کرتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں