جوہری معاہدے کی پابندی کا بوجھ ایران پر ڈالا جائے: الجبیر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سعودی عرب کے وزیر خارجہ عادل الجبیر نے کہا ہے کہ ان ملک یہ سمجھتا ہے کہ ایران نے 2015ء میں چھ عالمی طاقتوں کے ساتھ کیے اپنے جوہری پروگرام پر معاہدے کی تمام شرائط پر عمل درآمد نہیں کیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق نیویارک میں جنرل اسمبلی کے اجلاس کے موقع پر صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے عادل الجبیر نے کہا کہ سعودی عرب کو توقع ہے کہ عالمی برادری ایران کو جوہری معاہدے کا پابند بنانے کے لیے تمام ممکنہ اقدامات کرے گی۔ ان کا کہنا تھا کہ جوہری معاہدے کی خلاف ورزیوں کا تمام بوجھ ایران پر ڈالا جانا چاہیے۔

قبل ازیں بدھ کو امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا تھا کہ ان ملک ایران کے ساتھ طے پائے معاہدے کے حوالے سے ایک نئے فیصلے پر پہنچ گیا ہے تاہم انہوں نے اس نئے فیصلے کی تفصیل بیان نہیں کی۔

امریکی صدر کے بیان کے رد عمل میں ایران نے کہا ہے کہ ایران تمام ممکنہ حالات کا مقابلہ کرنے کے لیے تیار ہے۔ ایک ایرانی عہدیدار نے کہا کہ اگر ٹرمپ ایران سےمعاہدے سے باہر نکلتے ہیں تو تہران تمام سیناریوز کو سامنے رکھتے ہوئے جوابی اقدامات کے لیے تیار ہوگا۔ ’رائیٹرز‘ سے بات کرتےہوئے انہوں نے کہا کہ ایران فوری طور پر جوہری سرگرمیوں کی بحالی کی صلاحیت رکھتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں