رابطہ عالم اسلام کی سربراہ کی پاپائے روم سے ملاقات

اسلام کا انتہا پسندی سے کوئی تعلق نہیں: پوپ فرانسیس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

رابطہ عالم اسلامی کے سیکرٹری جنرل الشیخ ڈاکٹر محمد بن عبدالکریم العیسٰی نے ویٹیکن کے سرکاری دورے کے دوران پاپائے اعظم پوپ فرانسیس سے ملاقات کی۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق دونوں مذہبی رہ نماؤں کے درمیان ہونے والی بات چیت میں دو طرفہ دلچسپی کے امور، دنیا میں قیام امن بالخصوص ویٹیکن اور اسلامی دنیا کے درمیان تعواون کے فروغ، محبت اور روا داری کے کلچر کے فروغ اور بقائے باہمی کے اصول کو اپنانے پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

اس موقع پر رابطہ عالم اسلامی کے سیکرٹری جنرل نے پاپائے روم کے اسلام کے بارے میں منصفانہ خیالات بالخصوص انتہا پسندی اور تشدد کو اسلام سے جوڑنے کی سازشوں کو مسترد کیے جانے کے موقف کو سراہا۔

خیال رہے کہ پوپ فرانسیس متعدد مواقع پر دہشت گردی کی کارروائیوں کو اسلام سے جوڑنے کی سازشوں کی مذمت کرچکے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ انتہا پسندی اور دہشت گردی کا تعلق کسی ایک مذہب کے ساتھ نہیں اور نہ ہی اسلام کو انتہا پسندی اور دہشت گردی کا مذہب قرار دیا جاسکتا ہے۔

دونوں رہ نماؤں نے ایک دوسرے کو یاد گاری تحائف بھی دیے۔ رابطہ عالم اسلام کے سیکرٹری جنرل نے انہیں اسلامی تہذیب کا ایک ماڈل تحفے میں پیش کیا جو اس بات کی علامت ہے کہ اسلام دوسری تہذیبوں کا دشمن نہیں بلکہ دیگر تمام ادیان اور تہذیبوں کے ساتھ مل کر چلنے کی تاکید کرتا ہے۔ پوپ فرانسیس کی جانب سے ڈاکٹر العیسیٰ کو 500 سالہ پرانا قلم اور یادگاری میڈل تحفے میں پیش کیے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں