عراق کی وحدت کے لیے ملک کی قیادت مذاکرات کرے: سعودیہ

کردستان میں ریفرنڈم کے عدم انعقاد کا خیر مقدم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سعودی عرب نے عراق کی مرکزی قیادت اور صوبہ کردستان کے رہ نماؤں پر زور دیا ہے کہ وہ مشترکہ قومی مفادات اور ملک کی وحدت کے لیے آپس میں مذاکرات کریں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق سعودی وزارت خارجہ کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ عراقی قیادت کے درمیان ہونے والے مذاکرات ملک میں امن و استحکام، ملک کی وحدت اور خود مختاری کے ضامن ہونے چاہئیں۔

بیان میں صوبہ کردستان کی حکومت پر زور دیا گیا ہے کہ وہ خطے میں دہشت گردی کے خلاف جنگ میں حاصل ہونے والی کامیابیوں کی حفاظت کو یقینی بنائے۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ سعودی عرب عراق کی تمام سیاسی قوتوں کو دستور کے تحت طے پائے معاہدوں پر عمل درآمد پر زور دیتا رہے گا۔ ریاض نے صوبہ کردستان کی قیادت کی طرف سے آزادی کے ریفرنڈم کو ملتوی کیے جانے کو خوش آئند قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس فیصلے سے خطے کو کئی خطرات سے بچانے میں مدد ملے گی۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ عراق میں کوئی بھی یک طرفہ اقدام خطے کے حالات کو مزید پیچیدہ بنانے کا موجب بن سکتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں