رفسجانی خاندان کے پانچ افراد کے بیرون ملک سفر پر پابندی عاید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایران کے سابق صدر علی اکبر ہاشمی رفسنجانی کی صاحبزادی فائزہ رفسنجانی نے کہا ہے کہ حکومت نے ان کے خاندان کے پانچ افراد کا نام ’ای سی ایل‘ میں ڈال کر ان کے بیرون ملک سفر پر پابندی عاید کردی ہے۔ فائزہ کا کہنا ہے کہ انہیں یہ بتایا گیا کہ آیا ان کے خاندان کے متعدد افراد کے بیرون ملک سفر پر کیوں کر پابندی عاید کی گئی ہے۔

اخبار ’شہروند‘ سے گفت و گو کرتے ہوئے فائزہ رفسنجانی نے کہا کہ ممکن حکام کو یہ شبہ ہو کہ ہمارے خاندان کے پاس ایرانی رجیم کے خلاف کوئی اہم دستاویز ہو جسے ہم بیرون ملک جا کر افشاء کرنا چاہتے ہوں۔ ایسا کوئی بھی گمان غلط ہوگا کیونکہ ان کے خاندان کے تمام افراد محب وطن ہیں اور ملک کے خلاف ایسا کوئی اقدام نہیں کرسکتے۔

خیال رہے کہ فائزہ رفسنجانی کے والد مرحوم علی اکبر ہاشمی رفسنجانی ایک منجھے ہوئے سیاسی رہ نما اور معتدل لیڈر تھے۔ ان کی بیٹی فائزہ ہاشمی رفسنجانی ایک متحرک سماجی کارکن ہیں اوران کی سرگرمیوں سے ریاست کو ہمیشہ شکایتیں رہتی ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ پولیس فائزہ کو متعدد بار گرفتار کرکے جیلوں میں قید بھی کرچکی ہے۔

فائزہ نے بتایا کہ بیرون ملک سفر پرپابندی کا سامنا کرنے والے افراد میں اس کا نام بھی شامل ہے مگر اس کے پاس ایسی کوئی دستاویز نہیں جسے وہ بیرون ملک جانے کے بعد افشاء کرسکتی ہوں۔

انہوں نے بتایا کہ دو ماہ قبل ایرانی حکام نے ان کے خاندان کے چار دیگر افراد کو بھی بیرون ملک سفر سے روک دیا تھا، تاہم ان پابندیوں کی وجوہات بیان نہیں کی گئی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں