سعودی علماء کی خواتین کی ڈرائیونگ کے فیصلے کی حمایت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

گذشتہ روز خادم الحرمین الشریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز آل سعود کی طرف سے جاری کردہ شاہی فرمان میں ملک میں خواتین کو گاڑی چلانے کی اجازت دینے کا حکم صادر کیا گیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق شاہی فرمان میں کہا گیا ہے کہ خواتین کی ڈرائیونگ کے معاملے پر ملک کے سرکردہ علماء اور سپریم علماء کونسل نے شاہی فرمان کی تائید کی ہے۔

شاہی فرمان میں کہا گیا ہے کہ علماء کے خیال میں خواتین کی ڈرائیونگ میں کوئی شرعی امر مانع نہیں، تاہم اس کے نتیجے میں بعض تحفظات کی بناء پر علماء نے خواتین کی ڈرائیونگ پر محتاط رویہ اپنایا تھا۔ وہ تمام تحفظات ختم ہونے اور سد ذرائع کے بعد اب کوئی اور رکاوٹ باقی نہیں رہی ہے۔

شاہی فرمان میں کہا گیا ہے کہ چونکہ سعودی عرب اسلامی شرعی قوانین اور روایات کا پاسبان ہے۔ اس لیے شرعی قوامین واحکامات پرعمل درآمد کرنا اس کی اس کی اولین ترجیحات کا حصہ ہے۔ سوسائٹی کے تحفظ اور سلامتی کے معاملے میں کوئی کوتاہی نہیں برتی جائے گی۔ ان ہدایات کے ساتھ ساتھ ٹریفک قونین کے نفاذ کو یقینی بنانے اور ایگزیکٹو احکامات پرعمل درآمد کرتے ہوئے مردو خواتین کو یکساں ڈرائیونگ کی اجازت دینے کا حکم دیا گیا ہے۔

شاہی فرمان کے بعد اس پرعمل درآمد کے لیے وزارت داخلہ، خزانہ، لیبر اور سماجی ترقی کے حکام پر مشتمل ایک کمیٹی تشکیل دی گئی ہے جو ایک ماہ میں اپنی سفارشات مرتب کرے گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں