.

امریکا، سعودی عرب کو جدید میزائل شکن سسٹم تھاڈ فروخت کرے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی وزارت دفاع ’پینٹاگون‘ نے جمعہ کے روز ایک بیان میں کہا ہے کہ وزارت خارجہ نے سعودی عرب کو بلند ترین جگہ کو محفوظ بنانے والا تھرمل میزائل سسٹم ’تھاڈ‘ کی فروخت کی اجازت دے دی ہے، جس کے بعد الریاض کے لیے امریکا سے جدید ترین امریکی میزائل شکن نظام کی خریداری کی راہ ہموار ہوگئی ہے۔ خیال رہے کہ THAAD میزائل سسٹم کی قیمت 15 ارب ڈالر بتائی جاتی ہے۔

’پینٹاگون‘ کے مطابق سعودی عرب جیسے دوست ملک کو ’تھاڈ‘ میزائل سسٹم کی فروخت امریکا کی قومی سلامتی کی معاونت اور خارجہ پالیسی کے مفادات کا تحفظ کرسکے گی۔ سعودی عرب اور خلیجی خطے کے دوسرے ممالک کی طویل المدت امن وسلامتی اور انہیں ایران کی طرف سے لاحق خطرات کی روک تھام کے لیے ریاض کو ایسے جدید ترین میزائل نظام کی فراہمی اہمیت کی حامل ہے۔

امریکی وزارت خارجہ نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ وہ کانگریس کو بھی قائل کرے گی کہ سعودی عرب کو جدید ترین میزائل شکن سسٹم کی فروخت کیوںکر ضروری ہے اور امریکا کے لیے اس کی دفاعی اہمیت کیا ہے۔ امریکا خلیجی خطے میں اپنے اتحادی ممالک کی دفاعی ضروریات پوری کر کے انہیں ایران کی طرف سے لاحق خطرات کی روک تھام میں ان کی مدد کر سکتا ہے۔

خیال رہے کہ ’تھاڈ‘ میزائل شکن سسٹم کا شمار امریکا کے جدید ترین دفاعی نظاموں میں ہوتا ہے۔ جدید ترین راڈاروں سے لیس اس سسٹم میں کئی میزائل بیٹریاں نصب کی جا سکتی ہیں۔ یہ سسٹم بلند ترین مقام پر بھی بیلسٹک میزائلوں کے حملوں سے بچاؤ میں معاون ثابت ہو گا۔ امریکا نے ’تھاڈ‘ میزائل شکن سسٹم رواں سال جنوبی کوریا میں شمالی کوریا کے حملوں سے بچاؤ کے لیے نصب کیا ہے۔

خیال رہے کہ امریکا کے جدید ترین میزائل سسٹم کی سعودی عرب کو منظوری ایک ایسے وقت میں دی گئی ہے جب حال ہی میں سعودیہ اور روس کے درمیان بھی کئی اہم ترین دفاع معاہدے طے پائے ہیں۔ معاہدوں کے تحت سعودی عرب روس سے ’ایس 400‘ Kornet, EM، میزائل لانچر TOS-1A، کلاشنکوف AK-103 جیسے ہتھیاروں کی خریداری شامل ہے۔