.

برطانوی پارلیمان کمپیوٹر نظام پرسائبر حملے میں ایران کا ہاتھ کارفرما تھا؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران نے اس سال برطانوی پارلیمان کی ویب سائٹس اور کمپیوٹر نظام پر سائبر حملے کیے تھے۔یہ انکشاف اخبار ’’دا ٹائمز ‘‘ نے ہفتے کے روز کی اشاعت میں ایک رپورٹ میں کیا ہے اور اس میں ایک انٹیلی جنس جائزے کا حوالہ دیا ہے۔

جون میں برطانوی پارلیمان کی ویب سائٹس پر مسلسل سائبر حملے کیے گئے تھے۔ان حملوں کے ذریعے ای میلز کے کم زور پاس ورڈز کی نشان دہی کی کوشش کی گئی تھی۔اس سے ایک ماہ پہلے ہی برطانیہ میں صحت عامہ کی خدمات کو ایک کمپیوٹر وائرس کے ذریعے متاثر کیا گیا تھا۔

دا ٹائمز نے لکھا ہے کہ ایران کا برطانیہ میں کسی ہدف پر یہ پہلا نمایاں سائبر حملہ تھا۔قبل ازیں اس سائبر حملے کا روس پر الزام عاید کیا گیا تھا۔برطانیہ کے سائبر سکیورٹی مرکز نے فوری طور پر اس رپورٹ پر کوئی تبصرہ نہیں کیا ہے۔ایرانی حکومت نے بھی اس رپورٹ کے ردعمل میں کوئی بیان جاری نہیں کیا ہے۔

اخبار نے لکھا ہے کہ اس حملے کے محرکات کا تعین نہیں کیا جاسکا ہے کیونکہ یہ واضح نہیں ہوا ہے کہ وہ کوئی مالی فائدہ حاصل کرنا چاہتے تھے۔

اس رپورٹ کی اشاعت سے ایک روز قبل ہی برطانیہ اور دوسرے یورپی ممالک نے امریکا کو خبردار کیا ہے کہ وہ ایران کے ساتھ طے شدہ جوہری معاہدے کو نقصان پہنچانےسے گریز کرے۔