.

انڈونیشیا اور سُور کے گوشت پر پوتین کِھل کِھلا کر ہنس پڑے !

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

روس میں کابینہ کے اجلاس کے دوران وزیر زراعت الیگزینڈر کاچوف کی لغزش نے صدر ولادیمر پوتین کو کِھل کِھلا کر ہنسنے پر مجبور کر دیا۔
مقامی میڈیا کے مطابق ہفتے کے روز ہونے والے اجلاس میں مذکورہ وزیر گوشت کی برآمد سے متعلق منصوبے کے حوالے سے بریفنگ دے رہے تھے۔ اس دوران انہوں نے جرمنی کی جانب سے بعض ملکوں کو "سُور کا گوشت" برآمد کرنے کے طریقہ کار پر روشنی ڈالی جن میں سہرفہرست جاپان ، چین اور "انڈونیشیا" کا نام لیا۔

اس موقع پر "انڈونیشیا" کا ذکر آنے پر پوتین کے کان کھڑے ہو گئے۔ انہوں نے مسکراتے ہوئے اور حیرانگی کے ساتھ اپنے وزیر کو واضح کیا کہ یہ ایک مسلم ملک ہے لہذا وہاں سُور کے گوشت پر پابندی ہے۔

روسی وزیر زراعت کو کوئی جواب نہ بن پڑا تو انہوں نے کہا کہ "وہ کھا لیں گے"۔ پوتین نے پھر کہا کہ "نہیں وہ ایسا ہر گز نہیں کریں گے" اور اس کے ساتھ ہی پوتین نے کھل کھلا کر ہنسنا شروع کر دیا۔ اس کے بعد وزیر زراعت نے مسکراتے ہوئے معذرت کی اور پوتین سے کہا کہ "وہ جنوبی کوریا کہنا چاہتے تھے"۔