.

امریکی دباؤ مسترد ،پاسداران انقلاب ایران کا میزائل پروگرام میں تیزی لانے کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاسداران انقلاب ایران نے امریکا اور یورپی یونین کے دباؤ کے باوجود ملک کے بیلسٹک میزائلوں کے پروگرام میں تیزی لانے کا اعلان کیا ہے۔

ایران کی نیم سرکاری خبررساں ایجنسی تسنیم کے مطابق پاسداران انقلاب نے جمعرات کو ایک بیان میں کہا ہے:’’ ایران کے بیلسٹک میزائل پروگرام کو توسیع دی جائے گی اور امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی (انقلابی تنظیم، پاسداران) کے خلاف معاندانہ حکمتِ عملی کے ردعمل میں اس میں مزید تیزی لائی جائے گی‘‘۔

ٹرمپ انتظامیہ نے حال ہی میں میزائل تجربات کے ردعمل میں ایران کے خلاف یک طرفہ طور پر نئی پابندیاں عاید کی ہیں۔امریکا ایران سے یہ مطالبہ کرتا چلا آرہا ہے کہ وہ اپنے میزائلوں کو مزید ترقی دے اور نہ جوہری بم لے جانے کی صلاحیت کا حامل بنائے۔

جبکہ ایران کا یہ موقف رہا ہے کہ اس کا ایسا کوئی ارادہ نہیں ہے ۔اس کے یہ میزائل جوہری ہتھیار لے جانے کی صلاحیت کے حامل ہیں اور نہ اس مقصد کے لیے تیار کیے گئے ہیں۔وہ متعدد مرتبہ اس عزم کا اظہار کرچکا ہے کہ مغرب کی تنقید کے ردعمل میں قومی سلامتی کی ضروریات کے مطابق اپنے میزائل پروگرام کو جاری رکھے گا۔

ایران نے یہ اعلان ایسے وقت میں کیا ہے جب امریکی صدرڈونلڈ ٹرمپ نے جولائی 2015ء میں ایران اور چھے بڑی طاقتوں کے درمیان طے شدہ جوہری معاہدے کی تصدیق سے انکار کردیا ہے اور کہا ہے کہ وہ اس کو یکسر ختم بھی کرسکتے ہیں۔