.

سعودی عرب: اب زنانہ ملبوسات اور اشیاء کی دکانیں صرف خواتین چلائیں گی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں زنانہ ملبوسات اور اشیاء کی دکانیں اور اسٹورز اب صرف خواتین ہی چلا سکیں گے اور اس ضمن میں حکومت کے پروگرام کے تیسرے مرحلے پر ہفتے کے روز عمل درآمد کا آغاز ہوگیا ہے۔

سعودی پریس ایجنسی کے مطابق خواتین کو کاروبار وں میں شریک کرنے کے لیے گذشتہ برسوں کے دوران میں وزارتِ محنت اور سماجی ترقی کے شروع کردہ پہلے اور دوسرے مراحل پر عمل درآمد جاری ہے۔ان کے تحت خواتین کے لیے مخصوص کاروبا ر بتدریج صرف خواتین ہی کے سپرد کیے جا رہے ہیں۔

وزارت کے ترجمان خالد اباالخیل نے ایک بیان میں بتایا ہے کہ ’’ زنانہ کاروبار عورتوں کے سپرد کرنے کے منصوبے کے تحت خوشبوئیات ، جوتوں ، بیگ ، جرابوں اور تیار شدہ ملبوسات اور کپڑے کی دکانوں پر صرف خواتین ہی کام کریں گی‘‘۔

اس منصوبے کے تحت فی الحال تجارتی مراکز اور شاپنگ مالوں میں چھوٹی اور خواتین کی مخصوص دکانوں پر توجہ مرکوز کی جارہی ہے جہاں دُلھن کے ملبوسات ، برقعے ، گاؤن ،چوڑیاں ،دوسری ضروری اشیاء اور زچہ وبچہ کو درکار اشیاء فروخت کی جاتی ہے۔ایسی دکانوں میں گاہک اور دکان دار صرف خواتین ہی ہوں گی اور خواتین کسی رکاوٹ یا حجاب کے بغیر اپنی ضرورت اور پسند کی چیزیں خرید کرسکیں گی۔