.

مین ہیٹن میں حملہ کرنے والا یہ شخص ہے: ویڈیو وائرل ہو گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا کے شہر نیویارک کے مین ہیٹن ڈسٹرکٹ میں ٹرک تلے راہ گیروں کے کچلے جانے کے بعد گردش کرنے والی ایک ویڈیو کے بارے میں خیال ظاہر کیا جا رہا ہے کہ اس میں ایک جگہ سے دوسری جگہ دوڑنے والا شخص ہی دراصل حملہ آور ہے۔

ادھر امریکی ذرائع ابلاغ نے حملہ آور کی شناخت بھی ظاہر کر دی ہے۔ امریکی پولیس کا دعوی ہے کہ اسے جائے حادثہ سے فوری طور پر گرفتار کر لیا گیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ نے بھی متذکرہ ویڈیو حاصل کی ہے جس میں نامعلوم شخص فرار کی خاطر ادھر ادھر دوڑتا دیکھا جا سکتا ہے۔ وہاں موجود ایک شخص نے اس کی بے تابی کو مختصر ویڈیو کلپ میں محفوظ کیا ہے۔

نیویارک پولیس ڈیپارٹمنٹ کے کمشنر جیمز اونیل کا کہنا ہے کہ ملزم کو شدید زخم آئے ہیں لیکن وہ جان لیوا نہیں ہیں۔ انھوں نے جو صورتِ حال بیان کی اس کا خلاصہ کچھ یوں ہے:

مقامی وقت کے مطابق شام تین بجے کے قریب ایک گاڑی، جسے ہوم ڈیپو سے کرائے پر لیا گیا تھا، راہگیروں اور سائیکل سواروں پر چڑھ دوڑی
گاڑی کئی بلاکس تک لوگوں کو کچلی گئی، اور آخر میں وہ ایک سکول بس کو ٹکر مار کر رک گئی، جس سے گاڑی میں سوار دو بچے اور دو بالغ افراد زخمی ہو گئے
ڈرائیور گاڑی سے بظاہر دو پستول دکھاتا ہوا باہر نکلا اور ایک بیان دیا جو دہشت گردی سے مطابقت رکھتا ہے
اسے وہاں موجود پولیس اہلکاروں نے پیٹ میں گولی مار کر گرا دیا
جائے وقوعہ سے ایک چھرے دار بندوق اور ایک پینٹ بال گن برآمد کی گئی

ایک اور عینی شاہد ’فرینک‘ نے مقامی ٹیلی ویژن چینل این وائی ون کو بتایا کہ انھوں نے ایک شخص کو چوک کے گرد دوڑتے دیکھا اور پھر پانچ یا چھ گولیوں کی آواز آئی۔

’میں نے دیکھا کہ اس کے ہاتھ میں کوئی چیز ہے لیکن میں دیکھ نہیں سکا کہ وہ کیا چیز تھی۔ لوگوں نے کہا کہ وہ پستول تھا۔
‘جب پولیس نے اس پر گولی چلائی تو سب لوگوں نے بھاگنا شروع کر دیا اور افراتفری مچ گئی۔ جب میں نے اس کی طرف دیکھنے کی کوشش کی تو وہ نیچے گر چکا تھا۔