.

البغدادی کی روپوشی کے مقام کے حوالے سے بین الاقوامی اتحاد کا رد عمل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

داعش تنظیم کے خلاف امریکا کی قیادت میں برسرِ جنگ بین الاقوامی اتحاد نے جمعے کے روز ایک اعلان میں واضح کیا ہے کہ شدت پسند تنظیم کے سربراہ ابو بکر البغدادی کی موجودگی کے مقام کے حوالے سے اس کے پاس ایسی کوئی معلومات نہیں جس کا اعلان کیا جا سکتا ہو۔ اتحاد کی جانب سے یہ اعلان البغدادی کے البوکمال کے علاقے میں موجود ہونے سے متعلق خبروں کے جواب میں سامنے آیا ہے۔

لبنانی تنظیم حزب اللہ اور شامی حکومت کے "حربی ذرائع ابلاغ" کی جانب سے کہا گیا تھا کہ البغدادی اس وقت شام کے شہر البوکمال میں موجود ہے جہاں داعش تنظیم کی شامی حکومت اور اس کے لبنانی ، عراقی اور ایرانی حلیفوں کے ساتھ لڑائی جاری ہے۔

ادھر شامی حکومت کے ہمنوا حربی ذرائع ابلاغ کا کہنا ہے کہ داعش کا سرغنہ ممکنہ طور پر البوکمال میں محصور ہو چکا ہے جس کے آدھے سے زیادہ حصے پر بشار کی فوج اور اس کے حلیفوں نے رواں ہفتے میں کنٹرول حاصل کر لیا تھا۔ مزید یہ کہ شامی حکومت کے فوجیوں اور ان کے حلیف عناصر نے البوکمال میں سرچ آپریشن بھی کیا جس کے دوران حاصل ہونے والی معلومات کے مطابق ابو بکر البغدادی مذکورہ قصبے کے کسی علاقے میں موجود ہو سکتا ہے۔

دوسری جانب شام میں انسانی حقوق کے سب سے بڑے نگراں گروپ المرصد کے سربراہ رامی عبدالرحمن کا کہنا ہے کہ البغدادی کی روپوشی کے مقام کے بارے میں گروپ کے پاس ایسی کوئی رپورٹ نہیں ہے۔