.

شام سے ایرانی ملیشیاؤں کے انخلاء کی ضمانت نہیں دے سکتے: روس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

روسی وزیرخارجہ سیرگی لافروف نے کہا ہے کہ ان ملک شام میں موجود ایرانی ملیشیاؤں کو نکال باہر کرنے کا کوئی عہد کرسکتا ہے اور نہ ہی اس حوالے سے کوئی ضمانت دی جا سکتی ہے۔

روس کی سرکاری خبر رساں ایجنسی ’انٹر فیکس‘ نے وزیرخارجہ لافروف کا ایک بیان نقل کیا ہے جس میں ان کا کہنا ہے کہ ’شام میں ایران کی موجودگی آئینی ہے‘۔

قبل ازیں ہفتے کو امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے آسیان ممالک کے عالمی اقتصادی فورم میں شرکت کے موقع پر ویتنام میں اپنے روسی ہم منصب ولادی میر پوتین سے بھی ملاقات کی تھی۔ اس ملاقات میں دونوں رہ نماؤں نے شام میں داعش کو مکمل شکست دینے کے عزم کا اظہار کیا تھا۔

امریکی وزارت خارجہ کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیاہے کہ ٹرمپ اور ولادی میر پوتین نے 8 نومبر کو عمان میں جاری ہونے والے اردن، روس اور امریکا کے اس فارمولے کا خیر مقدم کیا جس میں شام میں جنگ بندی، غیرملکی جنگجوؤں کی تعداد کم کرنے اور شام میں دیر پا قیام امن کے لیے اقدامات سے اتفاق کیا گیا تھا۔