.

کابل : سیاسی میٹنگ کے باہر خود کش حملہ ، 9 افراد ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

افغان دارالحکومت کابل میں جمعرات کے روز تقریبات کے ایک مرکز کے باہرخود کش دھماکے کے نتیجے میں کم از کم 9 افراد ہلاک ہو گئے۔ افغان ذمہ داران کے مطابق کارروائی میں ایک سیاسی میٹنگ کو نشانہ بنانے کی کوشش کی گئی جو مذکورہ مرکز کے اندر ہو رہا تھا۔
ابھی تک کسی جانب سے حملے کی ذمہ داری قبول نہیں کی گئی ہے۔

دھماکے کے وقت شمالی صوبے بلخ کے گورنر عطا محمد نور کے حامی مرکز کے اندر موجود تھے۔ خود کش بم بار نے مرکز میں داخل ہونے کی کوشش کی تاہم اس کو سکیورٹی چیک پوسٹ پر روک لیا گیا جس پر اس نے خود کو دھماکے سے اڑا لیا۔ کابل پولیس کے سربراہ کے مطابق ہلاک ہونے والوں میں 7 پولیس اہل کار اور 2 شہری شامل ہیں۔

دھماکا اتنا شدید تھا کہ مرکز کی کھڑکیاں ٹوٹ گئیں اور نزدیک کھڑی گاڑی میں آگ لگ گئی۔ پولیس نے فوری طور پر علاقے کو گھیرے میں لے لیا۔

گورنر نور تاجک اکثریت والی پارٹی جماعہ اسلامیہ کے ایک اہم ذمے دار ہیں ۔ وہ صدر اشرف غنی اور قومی یک جہتی کی حکومت پر سخت تنقید کے سبب جانے جاتے ہیں۔ وہ 2019 کے انتخابات میں اپنی نامزدگی کا عندیہ بھی دے چکے ہیں۔