.

’سافٹ بنک‘ کا سعودیہ میں 25 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کا منصوبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

جاپان کے ’سافٹ بنک‘ کمپنی نے سعودی عرب میں اگلے تین سے چار برسوں کے دوران 25 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کا منصوبہ تیار کیا ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ ’سافٹ بنک‘ کے ڈائریکٹر ’ماسایوشی سون‘ مملکت سعودی عرب میں اپنے سرمایہ کاری تعلقات کو مزید گہرا کرنے میں دلچسپی رکھتے ہیں۔
العربیہ ڈاٹ نیٹ نے بلومبرگ ایجنسی کے حوالے سے ایک رپورٹ میں بتایا ہے کہ ’سافٹ بنک‘ کا سعودی عرب کے شمال مغرب میں واقع ’نیوم میگا سٹی پروجیکٹ‘ میں سرمایہ کاری کا ہدف 15 ارب ڈالر ہے۔ سی طرح سافٹ بنک کمپنی کی طرف سے سعودی عرب کے انویسٹمنٹ فنڈ میں شمولیت کا بھی فیصلہ کیا گیا ہے جس کے تحت جاپانی کمپنی سعودی عرب میں بجلی کے شعبے میں 10 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کا ارادہ رکھتی ہے۔

سافٹ بنک کی طرف سے سرمایہ کاری کا مقصد سعودی عرب میں مختلف شعبوں میں ذرائع آمدن بڑھانا اور آمدن کے نئے مواقع پیدا کرنا ہے۔ سعدی عرب متبادل توانائی کے وسائل پر کام کرنے کے ساتھ ساتھ ’نیوم میگا سٹی پروجیکٹ‘ پر بھی کام شروع کررہا ہے۔ اس منصوبے میں دنیا بھر میں شمسی توانائی کے حصول کے لیے سب سے زیادہ سرمایہ کاری کی توقع کی جا رہی ہے۔

خیال رہے کہ سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان بن عبدالعزیز نے ’ویژن 2030‘ کے تحت ’نیوم‘ سٹی پروجیکٹ کا اعلان کیا ہے۔ یہ پروجیکٹ کئی حوالوں سے سعودی عرب کی دنیا بھر میں اہمیت میں اضافہ کرے گا۔ کلاس کلین فیلڈ کی زیرنگرانی شروع کیے جانے والے اس منصوبے کا پہلا مرحلہ 2025ء تک مکمل کرنے کا ہدف مقرر کیا گیا ہے۔

’نیوم‘ سٹی مصر اور اردن کی سرحدوں کے قریب 25.9 مربع کلومیٹر پر پھیلا ایک وسیع صنعتی، تجارتی اور سیاحتی مرکز ہوگا۔ اس شہر میں 9 اہم ترین سیکٹرز میں سرمایہ کاری کی جائے گی۔ جن میں پانی، توانائی، ٹرانسپورٹس، خوراک، سائنس ٹکنالوجی، جدید صنعت، میڈیا پروڈکشن اور معیشت کے شعبے شامل ہیں۔