.

حزب اللہ کے غیر مسلح ہونے تک لبنان میں امن نہیں ہو سکتا: الجبیر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے وزیر خارجہ عادل الجبیر نے کہا ہے کہ لبنانی شیعہ ملیشیا حزب اللہ دہشت گرد تنظیم ہے اور اس کے غیر مسلح ہونے تک لبنان میں امن کا قیام ممکن نہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کےمطابق اپنے ہسپانوی ہم منصب کے ہمراہ ایک پریس کانفرنس سے خطاب میں الجبیر نے کہا کہ حزب اللہ کو غیر مسلح کرنا ضروری ہے۔ لبنان کے استحکام کے لیے حزب اللہ کو ہتھیار پھینک کر سیاسی میدان میں کام کرنا ہوگا۔

ان کا کہنا تھا کہ خطے بالخصوص لبنان میں امن واستحکام حزب اللہ کے ہتھیار پھینکنے سے مشروط ہے۔ دہشت گرد حزب اللہ ملیشیا کو قانون سے باہر رہ کر کام کرنے کی صورت میں اجازت نہیں ہونی چاہیے۔

ایک سوال کے جواب میں الحریری نے کہا کہ حزب اللہ نے سعد حریری کی راہ میں رکاوٹیں پیدا کیں اور ملک کا بینکاری نظام دہشت گردی کے لیے گروی رکھ لیا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ سعودی عرب اب بھی لبنان کی حمایت اور معاہدہ طائف کا پابند ہے۔

اس موقع پر پر سعودی وزیر خارجہ نے مشرق وسطیٰ کے بحرانوں کے حل کے لیے اسپین کے کردار کو سراہا۔

قبل ازیں سعودی وزیرخارجہ الجبیر نے اپنے فرانسیسی ہم منصب جان ایف لودریاں سے بھی ملاقات کی۔ اس ملاقات میں بھی حزب اللہ ملیشیا کی جانب سے عرب ممالک میں مداخلت اور تنظم کی دہشت گردانہ سرگرمیوں پر بات چیت گئی۔ ان کا کہنا تھا کہ حزب اللہ کے سربراہ حسن نصراللہ خود اعتراف کر چکے ہیں کہ وہ خطے میں ایران کا ایک ہتھیار ہیں۔