.

سعودی عرب: جنوری 2018ء سے گیسولین پر 5 فی صد اضافی قدری ٹیکس کے نفاذ کا فیصلہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کی جنرل اتھارٹی برائے زکاۃ اور آمدن ( غازی) نے کہا ہے کہ حکومت جنوری 2018ء سے گیسو لین پر اضافی قدری ٹیکس ( وی اے ٹی) نافذ کردے گی ۔

غازی نے ایک سعودی شہری کے سوال کے جواب میں ٹویٹر پر یہ اعلان کیا ہے۔اس نے حال ہی میں کہا تھا کہ مقامی ٹرانسپورٹ خدمات اور بنکوں میں انتظامی خدمات پر اضافی قدری ٹیکس نافذ کیا جائے گا۔البتہ بین الاقوامی ٹرانسپورٹیشن اور خلیج تعاون کونسل کے رکن ممالک سے باہر بھیجی جانے والی اشیاء وی اے ٹی سے مستثنا ہوں گی۔

وزارتِ صحت اور خوراک اور ادویہ اتھارٹی کی جانب سے جاری کردہ فہرست میں شامل ادویہ اور طبی آلات پر بھی یہ ٹیکس نافذ نہیں کیا جائے گا۔اس کے علاوہ کسی شہری کے زیر استعمال ذاتی رہائشی جائیداد کی فروخت یا اس کو کرایہ پر دینے پر بھی وی اے ٹی لاگو نہیں ہوگا۔

غازی نے یکم جنوری سے اضافی قدری ٹیکس کے نفاذ کے لیے بلدیات اور دیہی امور کی وزارت ، وزارت ِ محنت اور سماجی ترقی اور محکمہ کسٹم سے باہمی تعاون کے سمجھوتے طے کیے ہیں۔

غازی کے گورنر سہیل عبانامی کا کہنا ہے کہ اتھارٹی سرکاری اداروں کی اضافی قدری ٹیکس نظام کے نفاذ سے قبل ضروری تیاریوں کے سلسلے میں اس طرح کے سمجھوتے کررہی ہے اور وہ رجسٹریشن کے لیے ان سرکاری اداروں کی حوصلہ افزائی کرنا چاہتی ہے۔

گورنر نے جن سرکاری اداروں کی سالانہ آمدن دس لاکھ سعودی ریال سے زیادہ ہے،ان پر زوردیا ہے کہ وہ خود کو 20 دسمبر 2017 سے قبل وی اے ٹی نظام کے لیے رجسٹر کروالیں۔