.

بھارتی وزیر نے سرطان کی وجہ لوگوں کے گناہ قراردے دیے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

بھارت کی ریاست آسام کے وزیر صحت اپنے ایک انوکھے بیان کی وجہ سے شہ سرخیوں میں ہیں۔ وزیر صحت ہمانتا بسوا شرما نے سرطان کے مرض کو لوگوں کے اپنے گناہوں کی سزا قرار دیتے ہوئے کہا کہ یہ خدائی انصاف ہے کہ جو لوگ سرطان جیسے موذی مرض کا شکار ہیں یہ مرض انہیں ان کے ماضی کے گناہوں کی وجہ سے لاحق ہوا ہے۔

خبر رساں ایجنسی کے مطابق بی جے پی کے لیڈر کو اپنے اس بیان کی وجہ سے سیاسی حلقوں سمیت سرطان کے مریضوں کی طرف سے بھی کافی خفگی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

شرما نے کہا کہ جب ہم سے کوئی گناہ سرزد ہوتا ہے تو خدا ہمیں اس کی سزا دیتا ہے یہ سزا کبھی کبھار سرطان جیسے موذی مرض کی صورت میں ہوتی ہے اور کھی مختف حادثات کی صورت میں ہوتی ہے۔ شرما نے مزید کہا کہ اگر ہم اپنے ماضی کا بغور مطالعہ کریں تو ہمیں معلوم ہو گا کہ ہم اس وقت جس مصیبت سے دو چار ہیں یہ خدائی انصاف ہے

ہمانتا بسوا شرما نے اپنے اس فلسفے پر مزید زور دیتے ہوئے اپنی مقدس کتاب گیتا اور بائبل کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ جب کوئی مصیبت کے دور سے گزر رہا ہوتا ہے تو لازمی نہیں ہے کہ یہ مصیبت اس پر اس کے کردہ گناہوں کی وجہ سے مسلط کی گئی تو بلکہ ایسا بھی ممکن ہے کہ یہ گناہ اس کے والدین نے کیے ہوں اور وہ ان کی سزا بھگت رہا ہو۔

کانگریس کے رکن دیببرٹا سیکا نے ہمانتا بسوا شرما کر آڑھے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا کہ وزیر صحت کی طرف سے ایسا بیان سرطان کے مریضوں کے لیے انتہائی حیران کن اور افسوسناک ہے۔ شرما کے بیان کی وجہ سے مریضوں کے احساسات مجروح ہوئے ہیں لہذا اب وزیرصحت کو ان سے معافی مانگنی چاہیے۔


ریاست کے ایک اور لیڈر امین الاسلام نے وزیر صحت کے اس بیان کے بارے میں اپنے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ وزیر صحت نے یہ بیان ریاست میں سرطان کے بڑھتے ہوئے مرض پر قابو پانے میں ناکامی چھپانے کے لیے دیا ہے