.

مشرقی القدس فلسطین، مغربی حصہ اسرائیل کا دارالحکومت ہوگا: روس

ٹرمپ کے القدس بارے اقدام کے خطرناک نتائج مرتب ہوں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

روس نے جمعرات کے روز تجویز دی ہے کہ متحدہ بیت المقدس کو فلسطین یا اسرائیل کا دارالحکومت قرار دینے کے بجائے مشرقی بیت المقدس کو فلسطین اور مغربی القدس کو اسرائیلی ریاست کا دارالحکومت قرار دیا جائے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق روسی حکومت کے ترجمان دیمتری بیسکوف نے ماسکو میں ایک بیان میں کہا کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی طرف سے بیت المقدس کو اسرائیل کا دارالحکومت قرار دیے جانے کے بعد مشرق وسطیٰ کی صورت مزید پیچیدہ ہوجائے گی کیونکہ القدس کے بارے میں ٹرمپ کے اعلان پر عالمی برادری میں اتفاق رائے پیدا نہیں کیا جاسکتا۔

روسی حکومت نے القدس کے بارے میں ٹرمپ کے اعلان پر شدید تشویش کا اظہار کیا ہے اور فلسطینیوں اور اسرائیل سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ تحمل سے کام لیں۔

روسی وزارت خارجہ کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ ماسکو کو امریکی صدر کے القدس کے بارے میں بیان پر سخت خوف اور تشویش ہے۔ اس اعلان سے پورے خطے کو سنگین خطرات کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔

خیال رہے کہ بدھ کو امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے مقبوضہ بیت المقدس کو صہیونی ریاست کا دارالحکومت قرار دیا تھا۔ ان کے اس بیان پر عالمی برادری اور عالم اسلام کی طرف سے شدید رد عمل سامنے آیا ہے۔