.

وڈیو : بھارت میں مسلمان کو ہلاک کر کے جلا دینے والا انتہا پسند ہندو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

بھارت کی سب سے بڑی ریاست راجھستان میں ایک مسلمان کو ہلاک کر کے اس کی لاش جلا دینے کے واقعے میں ملوث ایک انتہا پسند ہندو کو جمعرات کے روز گرفتار کر لیا گیا۔ انٹرنیٹ پر وائرل ہونے والی وڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ ایک مسلمان شہری کو مار پیٹ اور پھر کہاڑی کے واروں کا نشانہ بنایا گیا۔ اس دوران مذکورہ شخص کی چیخ و پکار اورمدد کی اپیل کی آواز بھی سنائی دے رہی ہے یہاں تک کہ اس نے دم توڑ دیا۔

قاتل نے مقتول کی لاش کو آگ لگا دی اور پھر کیمرے کے سامنے آ کر کہا کہ "اے جہادی تجھ پر لازم ہے کہ تُو ہندوستان سے چلا جا نہیں تو تیرا بھی یہ ہی انجام ہو گا"۔

راجھستان کی پولیس کے مطابق انسٹاگرام پر وائرل ہونے والی وڈیو میں نظر آنے والے قاتل کا نام Shambhu Lal Regar ہے جس کی عمر عمر 35 سے 40 برس کے درمیان ہے جب کہ مقتولAfrazul Mohammad کی عمر 50 برس لگ بھگ ہے۔

بھارت میں انگریزی اخبار ہندوستان ٹائمز کے مطابق مقتول شخص ریاست کے شہرUdaipur میں ایک ہندو عورت سے ملاقات کر رہا تھا۔ اس دوران قاتل ہندو ریگار کو خبر ہو گئی اور اس نے افروزل کو پکڑ لیا جو شادی شدہ اور تین لڑکیوں کا باپ تھا۔

ریگار نے اپنے 14 سالہ بھتیجے کو ساتھ لیا تا کہ افروزل کے ساتھ پیش آنے والے واقعے کی وڈیو بن سکے۔ اس کے بعد مغربی بنگال سے تعلق رکھنے والے افروزل کو شہر سے باہر ایک کھیت میں لے جایا گیا۔ افروزل اس علاقے میں کھیت باڑی کیا کرتا تھا جہاں قاتل ریگار رہتا ہے۔

پولیس انسپکٹرManoj Kumar نے اس امر کی تصدیق کی کہ ریگار نے جس وقت افروزل کی لاش کو آگ لگائی تو اس وقت افروزل دم توڑ چکا تھا۔

انگریزی زبان کے پاکستانی اخبارThe Nation کے مطابق ریگار نے جہادیوں کو دھمکی دینے کے فورا بعد لاش پر ایندھن چھڑکا اور پھر جلتی ہوئی ماچس کی تیلی اس پر پھینک دی۔ اس کے بعد وہاں سے کوچ کر گیا۔ بھارتی اخبارIndian Express کے مطابق مقتول کی ایک 24 سالہ بیٹیRejina Khatun کا کہنا ہے کہ وہ اپنے باپ کے قاتل کو کھلے میدان میں عوام کے سامنے پھانسی پر لٹکا ہوا دیکھنا چاہتی ہے۔