.

یمنی بحران کا حل علاقائی استحکام کی قیمت پر نہیں ہوگا: ولی عہد ابو ظبی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ابو ظبی کے ولی عہد شیخ محمد بن زاید نے کہا ہے کہ متحدہ عرب امارات اور یمن میں قانونی حکومت کی حمایت کے لیے برسر پیکار عرب اتحاد جنگ زدہ ملک میں جاری بحران کے سیاسی حل کے حامی ہیں اور وہ اس کی ضرورت پر زور دیتے چلے آ رہے ہیں۔

انھوں نے کہا کہ بحران کا حل خطے کی سلامتی اور استحکام کی قیمت پر نہیں ہوگا اور ملک کے باہر سے کام کرنے والی عسکری ملیشیا ؤں کو بااختیار بنانے کے عمل سے بھی ایسا نہیں ہوگا کیونکہ وہ سعودی عرب اور خطے کی سلامتی اور تحفظ کے لیے براہ راست خطرہ ہیں۔

انھوں نے واشنگٹن انسٹی ٹیوٹ برائے مشرق قریب پالیسی میں گفتگو کرتے ہوئے امریکا کے القدس کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کرنے کے حالیہ فیصلے پر اپنے ملک کی جانب سے تشویش کا اظہار کیا اور کہا کہ اس کے علاقائی استحکام اور امن عمل پر منفی اثرات مرتب ہوں گے۔

ابو ظبی کے ولی عہد نے اس امید کا اظہار کیا ہے کہ امریکی انتظامیہ اپنےا س فیصلے کو واپس لے لے گی اور تمام فریقوں کے مفاد کے مطابق حقیقی امن کے قیام کے لیے مؤثر انداز میں اور غیر جانبداری سے کام کرے گی۔