.

جنسی ہراسیت کے الزام کے بعد امریکی رکنِ پارلیمنٹ کی خودکشی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا میں ریپبلکن پارٹی سے تعلق رکھنے والے ایوانِ نمائندگان کے رکن ڈین جانسن نے بدھ کی رات خود کو گولی مار کر خودکشی کر لی۔ جانسن پر ایک کم عمر لڑکی کو جنسی ہراسیت کا نشانہ بنانے کا الزام تھا۔

امریکی میڈیا کے مطابق پولیس نے بتایا ہے کہ کینٹکی کی نمائندگی کرنے والے 57 سالہ جانسن نے ماؤنٹ واشنگٹن پُل کے نزدیک اپنی گاڑی روکی اور وہاں سے پیدل چلتے ہوئے پُل کے پاس پہنچ کر خود کو گولی مار دی۔ پولیس کے مطابق لاش کا پوسٹ مارٹم جمعرات کے روز ہو گا۔

جانسن کی موت کا واقعہ کینٹکی تحقیقاتی مرکز کی جانب سے اُس پر عائد کیے جانے والے الزام کے تین روز بعد پیش آیا ہے۔ الزام میں کہا گیا کہ جانسن نے 2012 میں اپنی بیٹی کی ایک 17 سالہ دوست ماراندا ریچمونڈ کو جنسی حملے کا نشانہ بنایا تھا۔ اس الزام کے نتیجے میں کانگریس میں ریپبلکن اور ڈیموکریٹک رہ نماؤں نے جانسن سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کیا تھا۔

تاہم جانسن نے ان الزامات کی یکسر تردید کرتے ہوئے کہا تھا کہ یہ محض ڈیموکریٹس کی جانب سے اُن کی ساکھ بدنام کرنے کی مہم ہے۔

یاد رہے کہ ڈین جانسن نے گزشتہ برس اُس وقت ایک بڑا ہنگامہ کھڑا کر دیا تھا جب انہوں نے سابق صدر باراک اوباما اور ان کی اہلیہ کو بندر اور بندریا سے تشبیہہ دی تھی۔