.

داعش نے سینٹ پیٹرس برگ میں حملے کی ذمہ داری قبول کرلی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شدت پسند تنظیم ’داعش‘ نے گذشتہ بدھ کو روس کے شہر سینٹ پیٹرس برگ میں ایک تجارتی مرکز میں ہونے والے حملے کی ذمہ داری قبول کی ہے۔ اس حملے میں کم سے کم تیرہ افراد زخمی ہوگئے تھے۔

روسی حکام نے واقعےکی مجرمانہ پہلو سے تحقیقات جاری رکھی ہوئی ہیں۔ تفتیش کاروں کا کہنا ہے کہ تجارتی مرکز میں دھماکہ ابتدائی نوعیت کے ایک بم سے کیا گیا جسے ایک دھاتی ٹکرے میں چھپایا گیا تھا۔

صدر ولادی میر پوتین حملے کے وقت ماسکو میں شام میں لڑائی کے دوران ہلاک ہونے والے فوجیوں کی یاد میں منعقدہ ایک تقریب میں شریک تھے۔ انہوں نے اس کارروائی کو دہشت گردانہ واقعہ قرار دیا۔

خیال رہے کہ تیس ستمبر 2015ء کوشام میں روسی فوج کی مداخلت کے بعد داعش نے کئی بار روس کو سنگین نتائج کی دھمکیاں دی تھیں۔

صدر ولادی میر پوتین نے چند ہفتے قبل شام سے اپنی فوجیوں کے جزوی انخلاء کا اعلان کیا تھا۔ تاہم روس اپنی ساری فوج شام سے واپس نہیں بلا رہا۔ روسی حکام کا کہنا ہے کہ انہیں خدشہ ہے کہ داعش کے دہشت گرد شام اور عراق میں دوبارہ منظم ہوسکتے ہیں۔