.

پاسدارانِ انقلاب ایران کی’’ کاروباری سلطنت‘‘ کہاں تک پھیلی ہوئی ہے؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران میں سپاہ پاسداران انقلاب سب سے طاقتور قوت ہیں اور وہ ہر سیاہ وسفید کے مالک ہیں۔ ایران کی سکیورٹی اور انٹیلی جنس ایجنسیوں کا کنٹرول تو ان کے ہاتھ میں ہے ہی ،مگر وہ سیاست اور اقتصادیات میں بھی ایک بالا دست طاقت ہیں۔وہ اربوں ڈالرز مالیت کے اثاثوں کے مالک ہیں۔ اس ناتے سے ایران کے سیاسی نظام پر ان کا نمایاں اثر ورسوخ ہے۔

حال ہی میں ایرانی رجیم نے فوجی اسلحے کے لیے بجٹ بڑھانے کا فیصلہ کیا ہے اور یہ دراصل پاسداران انقلاب کے بجٹ میں اضافہ کیا گیا ہے جو اس وقت غیر ملکی سرزمینوں پر بروئے کار ہیں۔ وہ یمن میں حوثی شیعہ باغیو ں کی حمایت کررہے ہیں ،لبنان میں حزب اللہ کے پشتی بان ہیں اور عراق میں انھوں نے شیعہ ملیشیاؤں پر مشتمل الحشد الشعبی کو تشکیل دیا ، پالا پاسا اور توانا کیا۔ شام میں صدر بشارالاسد کی سفاک حکومت کو دوام بخشنے کے لیے اس کی فوج کے شانہ بشانہ باغی گروپوں کے خلاف جنگ لڑی ہے۔

پاسداران انقلاب اپنی جنگی سرگرمیوں کے لیے وسائل کہاں سے حاصل کرتے ہیں،اس کی ایک جھلک ان تصاویر میں دیکھی جاسکتی ہے اور ان سے یہ اندازہ ہو سکتا ہے کہ پاسداران انقلاب کی ’’ کاروباری سلطنت ‘‘ کہاں تک پھیلی ہوئی ہے؟